ترکی، ناکام فوجی بغاوت کے بعد نافذ ایمرجنسی ختم

ترک حکومت کی جانب سے ناکام فوجی بغاوت کے بعد لگائی جانے والی ایمرجنسی دو سال بعد ختم کردی گئی۔


غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق 15 جولائی 2016 کو ترک فوج کے ایک گروپ نے صدر رجب طیب اردوان کا تختہ الٹنے کی کوشش کی تھی جس کو ناکام بنا دیا گیا تھا۔ اس بغاوت میں فوجیوں سمیت تقریبا 249 افراد ہلاک اور 2100 زخمی ہوئے تھے۔

ترکی میں فوجی بغاوت کو کچل دیا گیا،وزیراعظم بن علی یلدرم

ترکی میں فوجی بغاوتوں کا احوال

صدر رجب طیب اردوان نے فوجی بغاوت کو کچلنے کے بعد 20 جولائی 2016 کو ملک میں تین ماہ کے لئے ایمرجنسی نافذ کی تھی لیکن حالات پر مکمل قابو پانے کے لئے ایمرجنسی میں سات بار توسیع کی گئی۔

ترکی میں دو سالہ ایمرجنسی کے دوران تقریبا 80 ہزار افراد کو گرفتار کیا گیا جبکہ بڑی تعداد میں لوگوں کو سرکاری اداروں سے نکال دیا گیا۔ ترکی نے ناکام فوجی بغاوت کا الزام امریکا میں مقیم فتح اللہ گولن پر لگایا تھا۔

failed coup

Fethullah Gülen

Tabool ads will show in this div