ایون فیلڈ ریفرنس فیصلے کیخلاف نوازخاندان کی اپیلیوں پر سماعت منگل کو ہوگی

Sheikh Faisal Rasheed

احتساب عدالت اسلام آباد کے ایون فیلڈ ریفرنس کیس کے خلاف اپیلیوں پر سماعت منگل کے روز ہو رہی ہے۔ نواز فیملی کی جانب سے فیصلے کو چیلنج کیا گیا ہے۔ واضح رہے کہ ایون فیلڈریفرنس کیس میں نواز شریف کو 10 سال اور مریم نواز کو 7 سال قید کی سزا سنا دی، جب کہ کیپٹن ریٹائرڈ محمد صفدر کو ایک سال قید کی سزا سنائی گئی ہے۔

چیف جسٹس آفس کی جانب سے اسلام آباد ہائی کورٹ میں اپیلیں منگل کو سماعت کیلئے مقرر کی گئی ہیں۔ جسٹس محسن اختر کیانی اور جسٹس میاں گل حسن اورنگزیب پر مشتمل دو رکنی بینچ درخواستوں کی سماعت کرے گا۔

اسلام آباد کی احتساب عدالت اسلام آباد کے فیصلے کے خلاف قانونی حکمت عملی اختیار کرتے ہوئے نواز شريف، مریم نواز اور کیپٹن ریٹائرڈ صفدر نے سزاؤں کے خلاف اسلام آباد ہائي کورٹ ميں اپیلیں دائر کی ہیں، جب کہ جیل ٹرائل نہ کرنے اور العزیزیہ اور فلیگ شپ ریفرنسز دوسری عدالت منتقل کرنے کی درخواستیں بھی دائر نواز خاندان کی جانب سے دائر کی گئی ہیں۔

اپیلوں میں موقف اختیار کیا گیا احتساب عدالت کے فیصلے میں انصاف کے تقاضے پورے نہیں کئے گئے۔ سزائیں ضمنی ریفرنس کی بنیاد پر سنائیں گئیں، جب کہ ضمنی اور عبوری ریفرنس کے الزامات میں تضاد تھا، درخواستوں میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ فیصلہ شواہد پر مبنی نہیں، کرپشن بھی ثابت نہیں ہوسکی، لہٰذا قید، جرمانے، نااہلی اور جائیداد قرقی سزائیں کالعدم قرار دے کر تینوں کو بری کیا جائے۔

نواز شریف، مریم اور محمد صفدر کی جانب سے اپیلوں کا حتمی فیصلہ آنے تک سزائیں معطل کرنے کی استدعا کی گئی ہے۔

ISLAMABAD HIGH COURT

Election2018

Avenfield Reference Case

Tabool ads will show in this div