انتخابی امیدواروں کو سیکیورٹی خدشات کا سامنا

[video width="640" height="360" mp4="https://i.samaa.tv/wp-content/uploads/sites/11//usr/nfs/sestore3/samaa/vodstore/urdu-digital-library/2018/07/Karachi-Candidates-Security-KHI-PKG-14-07.mp4"][/video]

مستونگ دھماکے کے بعد کراچی ميں بھی خطرات بڑھ گئے، سیکیورٹی خدشات کے باعث انتخابی اميدواروں نے نقل و حرکت محدود کردی۔

بڑے شہر ميں بڑے رہنماؤں کو سيکيورٹی خدشات لاحق ہوگئے، کراچي ميں انتخابی مہم چلانا مشکل ہونے لگا، رہنماؤں نے نقل و حرکت محدود کرديں۔

پيپلزپارٹی، پی ایس پی قيادت، ايم کيو ايم کے عامر خان، خواجہ اظہار، فيصل سبزواری، تحريک انصاف کے فيصل واؤڈا، علی زیدی اور مہاجر قومی موومنٹ کے چيئرمين آفاق احمد کو سيکيورٹی خدشات ہیں

فيصل واوڈا کہتے ہیں کہ يہاں کوئی پوليس نہيں، ڈيفنس ميں کچھ ہوا تو ميں ذمہ دار نہيں۔

حافظ نعيم الرحمان بولے کہ  سيکيورٹی خدشات کے باوجود ہم جلسہ ضرور کريں گے۔

دوسری جانب نگراں حکومت نے مرزا خاندان کو سيکيورٹی دينے کا فيصلہ کرليا، ذوالفقار مرزا، فہمیدہ مرزا اور حسنین مرزا کو سیکیورٹی فراہم کی جائے گی۔

PTI

SECURITY THREATS

Election 2018

#GE2018

Tabool ads will show in this div