کوئٹہ میں سیکورٹی ہائی الرٹ، بی اے پی اور پی ٹی آئی نے کوئٹہ میں جلسہ منسوخ کر دیا

رپورٹ:ظہیر ظرف

کوئٹہ میں سانحہ مستونگ کے بعد سیکورٹی ہائی الرٹ کرتے ہوئے پولیس کی3500 اضافی پولیس کی نفری تعینات کی گئی ہے جب کہ نماز جنازہ کی سیکیورٹی کے لیے بھی مزید اھلکارتعینات ہوں گے۔

سانحہ مستونگ میں بلوچستان عوامی پارٹی کے نامزد امیدوار نوابزادہ سراج رائیسانی کی شہادت کے بعد بلوچستان عوامی پارٹی نے آج کوئٹہ میں ہونے والا اپنا جلسہ بھی منسوخ کر دیا ہے،میڈیا سے بات کرتے ہوئے بلوچستان عوامی پارٹی کے مرکزی صدر جام کمال خان نے سانحہ مستونگ میں شہادتوں کے بعد آج کوئٹہ میں ہونے والا اپنا جلسہ منسوخ کرنے سمیت تین روزہ سوگ کا اعلان کرتے ہوئےتمام پارٹی سرگرمیوں کو تین دن کے لیے ملتوی کرنے کا اعلان کیا ان کا کہنا تھا کہ نوابزادہ سراج رئیسانی کی شہادت بڑا نقصان ہے جس کا ازالہ کسی طور ممکن نہیں۔

دوسری طرف پی ٹی آئی بلوچستان کے ترجمان کی جانب سے بھی صوبے میں امن اومان کی صورتحال کو مد نظر رکھتے ہوئے 17 جولائی کو کوئٹہ میں ہونے والا اپنا جلسہ منسوخ کر دیا ہے،جلسے سے پی ٹی آئی کے چئیرمین عمران خان نے بھی خطاب کرنا تھا۔

جب کہ الیکشن کمیشن نے بھی مستونگ میں دہشت گردانہ واقعہ کے بعد حلقہ پی بی 35 پر انتخابات ملتوی کرنے کے احکامات جاری کر دئیے ہیں،اب پی بی 35 پرعام انتخابات کے بعد ضمنی الیکشن ہوں گے۔

Election Postponed

Election 2018

Mastung Attack

Balochistan Awami Party

PTI balochistan

security high alear

Tabool ads will show in this div