زلفی بخاری کا نام بلیک لسٹ سے نکالنے کا حکم جاری

اسلام آباد ہائی کورٹ نے پی ٹی آئی رہنما عمران خان کے قریبی دوست زلفی بخاری کا نام بلیک لسٹ سے نکالنے کا فوری حکم جاری کردیا۔ عدالتی حکم میں کہا گیا ہے کہ زلفی بخاری پر عائد سفری پابندیاں فوری ختم کی جائیں۔ واضح رہے کہ نام بلیک لسٹ میں شامل کرنے کے فیصلے کو زلفی بخاری نے عدالت میں چیلنج کیا تھا۔

اسلام آباد ہائی کورٹ کے جج جسٹس عامر فاروق نے پاکستان تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان کے قریبی دوست زلفی بخاری کی جانب بلیک لسٹ میں نام ڈالنے اور عائد سفری پابندیاں ختم کرنے سے متعلق کیس کی سماعت کی۔

زلفی بخاری نے نام بلیک لسٹ میں ڈالنے کو اسلام آباد ہائیکورٹ میں چیلنج کر رکھا تھا جس پر فریقین وکلا کے دلائل مکمل ہونے کے بعد محفوظ کردہ فیصلہ جسٹس عامر فاروق نے آج سنایا۔ عدالت نے اپنے فیصلے میں حکم دیا کہ زلفی بخاری کا نام بلیک لسٹ سے نکالا جائے اور ان پر لگائی گئی سفری پابندیاں بھی ختم کی جائیں۔

یاد رہے کہ 12 جون کو زلفی بخاری عمران خان کے ہمراہ عمرہ کی ادائیگی کے لیے سعودی عرب جارہے تھے جہاں امیگریشن حکام نے ان کا نام بلیک لسٹ میں ہونے کے باعث انہیں بیرون ملک سفر کرنے سے روک دیا تھا تاہم کچھ دیر بعد ہی ان کا نام بلیک لسٹ سے نکال دیا گیا تھا۔

معاملہ سامنے آنے پر نگران وزیرداخلہ اعظم خان نے اعتراف کیا کہ انہوں نے زلفی بخاری کا نام فائل دیکھنے کے بعد بلیک لسٹ سے نکالا تاہم اس حوالے سے عمران خان سمیت کسی نے بھی انہیں فون نہیں کیا۔

قومی احتساب بیورو (نیب) نے زلفی بخاری کا نام ای سی ایل میں ڈالنے کی استدعا کی تھی جب کہ وزارت داخلہ نے ان کا نام ای سی ایل میں ڈالنے کی بجائے بلیک لسٹ میں ڈال دیا تھا جس کے خلاف انہوں نے اسلام آباد ہائی کورٹ سے رجوع کیا۔

PTI

IMRAN KHAN

ECL

black list

NOOR KHAN AIR BASE

ZULFI BUKHARI

Tabool ads will show in this div