نوجوان نے 'محبت کا ثبوت' دینے کے لیے خود کو گولی ماردی

بھارتی ریاست مدھیہ پردیش کے شہر بھوپال میں ایک نوجوان نے محبت کا ثبوت دینے کے لیے لڑکی اور اس کے والد کے سامنے خود کو گولی مار دی۔

بھارتی ذرائع ابلاغ کے مطابق بھارتیہ جنتا پارٹی یوتھ ونگ کے مقامی لیڈر اٹل لوکھانڈے ایک خاتون کے ’عشق‘ میں گرفتار تھے۔ خاتون کے والد نے اٹل کے سامنے شرط رکھ دی کہ اپنی محبت کا ثبوت دینے کے لیے خود کو گولی مارنی ہوگی۔ اگر بچ گئے تو دونوں کی شادی کرادی جائے گی، بصورت دیگر دونوں ’اگلے جنم‘ میں ہمشہ کے لیے ساتھ ہوں گے۔

اٹل لوکھانڈے نے خاتون کے والد کی شرط قبول کرلی اور گزشتہ رات 9 بجے اپنے چچا کے ہمراہ اس کے گھر پہنچے جہاں اس کے چچا گھر کے باہر اس کا انتظار کرنے لگے جبکہ اٹل نے اندر جاکر لڑکی اور اس کے والد کے سامنے اپنے سر میں گولی ماردی۔

فائرنگ کی آواز سن کر اس کے چچا اندر گئے اور خاتون کی مدد سے اٹل کو فوری طور پر اسپتال منتقل کیا جہاں ڈاکٹروں نے اس کے دماغ کو مردہ قرار دیا تاہم ابھی تک وہ وینٹی لینٹر پر موجود ہے۔

واقعہ سے قبل اٹل لوکھانڈے نے اپنی فیس بک آئی ڈی پر ایک پوسٹ کی ہے جس میں اس نے خاتون کے ساتھ مختلف مواقع پر کھینچے گئے 40 تصاویر شیئر کی گئیں اور اپنی یادوں کا تذکرہ کیا۔

اسی فیس بک پوسٹ میں اٹل نے لکھا ہے کہ جاتون کے والد نے محبت کا ثبوت دینے کے لیے خود کو گولی مارنے کی شرط رکھی ہے اور میں یہ شرط پوری کرنے جارہا ہوں۔ اٹل نے اس پوسٹ میں واضح کیا ہے کہ میرے اس عمل میں خاتون کو ’قصور وار‘ نہ ٹھہرایا جائے۔ یہ میرا ذاتی عمل ہے۔

اس سے قبل اٹل نے خاتون کے والد سے رشتہ مانگا تھا تاہم انہوں نے انکار کردیا جس پر اٹل نے ان کو دھمکیاں بھی دیں جس کے نتیجے میں خاتون نے بھی اٹل کو نظر انداز کیا اور اس کے فون کالز بھی سننا چھوڑ دیا تاہم اٹل نے اس کو دوبارہ منالیا اور ایک بار پھر اس کے والد سے رشتہ مانگنے چلا گیا۔

پولیس نے واقعہ کے بعد خاتون اور اس کے اہل خانہ کو احتیاطی اقدام کے تحت ’محفوظ مقام‘ پر منتقل کردیا ہے جبکہ واقعہ کی ایف آئی آر میں تاحال کسی کو نامزد نہیں کیا گیا۔

پولیس نے کہا ہے کہ ’خودکشی‘ کے عوامل کا جائزہ لے رہے ہیں۔

Tabool ads will show in this div