الیکشن سر پر آئے تو سیاستدانوں کی دوا کے ساتھ دعائيں بھی شروع

Jun 30, 2018

[video width="640" height="360" mp4="https://i.samaa.tv/wp-content/uploads/sites/11//usr/nfs/sestore3/samaa/vodstore/urdu-digital-library/2018/06/AAS-Political-Dawa-Dua-PKG-30-06-REms.mp4"][/video]

پاکستاني سياست ميں خانقاہوں اور اولياء اللہ کے مزارات کا کردار بھي اہميت کا حامل ہے، انتخابات سے قبل سياستدان مزارات پر حاضري کے ليے ضرور پہنچتے ہيں۔

اليکشن سر پر آگئے سياستدانوں نے دوا کے ساتھ دعائيں بھي شروع کرديں، بلاول بھٹو زرداري بھي دعا کرنے حضرت عبداللہ شاہ غازي رحمة اللہ عليہ کے مزار پر پہنچے، جہاں انہوں نے پھول چڑھائے فاتحہ خواني اور خصوصي دعائيں کيں۔

گزشتہ دنوں عمران خان بھي اہليہ کے ساتھ پاکپتن گئے تھے، جہاں انہوں نے بابا فرید الدين گنج شکر کے مزار پر حاضر ہوکر دعائیں مانگي تھيں۔

مزارات پر حاضري کي روايت نئي نہيں ماضي ميں بھي اليکشن سے پہلے سياسي رہنما اولياء اللہ کي درگاہوں ميں حاضرياں ديتے آئے ہيں۔

انتخابات سے قبل نواز شريف اور شہباز شريف داتا دربار پر دعا کرنے جاتے رہے ہيں، محترمہ بينظير بھٹو بھي مختلف مزارات اور خانقاہوں ميں جاکر دعا کيا کرتي تھيں۔

ELECTION

BILAWAL

IMRAN KHAN

Nawaz Shariff

Tabool ads will show in this div