توہین عدالت پر ن لیگ کے 4 رہنماؤں کو سزا، احسن اقبال نے معافی مانگ لی

Jun 29, 2018

 

[video width="640" height="360" mp4="https://i.samaa.tv/wp-content/uploads/sites/11//usr/nfs/sestore3/samaa/vodstore/urdu-digital-library/2018/06/Contempt-Cases-Lhr-Pkg-29-06.mp4"][/video]

قصور ميں عدليہ مخالف ريلی نکالنے پر لاہور ہائیکورٹ نے ن ليگ کے سابق ايم اين اے سميت 4 افراد کو ايک ماہ قيد کی سزا سنا دی، سزا کے بعد شيخ وسيم نااہل ہوکر اليکشن کی دوڑ سے بھی باہر ہوگئے۔ سابق وزیر داخلہ احسن اقبال نے عدالت سے غیر مشروط معافی مانگ لی۔

توہين عدالت کيس ميں لاہور ہائی کورٹ کا بڑا فيصلہ آگیا، قصور ميں ريلی نکالنے والوں کو جيل بھجواديا، نون ليگ کا ايک اور اميدوار نااہل ہوگيا۔

ايک ماہ کیلئے جيل جانیوالوں ميں نون ليگ کے سابق ايم اين اے شيخ وسيم شامل ہيں جبکہ جمیل خان، ناصر خان اور لطیف کو بھی سزا سنائی گئی ہے۔

تمام مجرموں کو عدالت سے نکلتے ہی گرفتار کرليا گيا، شيخ وسيم اين اے 137 قصور سے ن لیگ کے اميدوار بھی تھے، تاہم سزا کے بعد وہ عوامی عہدے کیلئے نااہل ہوگئے ہیں۔

عدالت کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے مسلم لیگ ن کے رہنماء شیخ وسیم نے کہا کہ اس حلقے سے اب میرا بیٹا الیکشن لڑے گا، فیصلہ اللہ کی عدالت پر چھوڑتے ہیں۔

توہين عدالت کی درخواست ميں احسن اقبال بھی عدالت ميں پيش ہوئے، سابق وزير داخلہ نے عدالت سے غيرمشروط معافی مانگی، فاضل جج نے ريمارکس دئيے اس کا ذکر آپ کے تحريری جواب ميں نہيں۔ عدالت نے احسن اقبال کو 2 جولائی کو ترميم شدہ جواب جمع کرانے کی ہدايت کردی۔

PUNJAB

CONTEMPT OF COURT

Election 2018

#GE2018

Shaikh Waseem

Tabool ads will show in this div