نواز شریف کا لندن پراپرٹی سے کوئی تعلق نہیں، نیب عدالت میں بیان

Jun 29, 2018

سابق وزیراعظم نواز شریف کا لندن پراپرٹی سے کوئی تعلق نہیں۔ کوئین بینچ کے فیصلے سے بھی کوئی شواہد نہیں آئے۔ لندن فلیٹس ریفرنس میں وکیل امجد پرویز کے دلائل آج بھی مکمل نہ ہوسکے۔

احتساب عدالت نے العزیزیہ ریفرنس میں جے آئی ٹی سربراہ واجد ضیا کو بھی منگل کو طلب کرلیا۔

احتساب عدالت میں لندن فلیٹس ریفرنس کی سماعت کے دوران مریم نواز کے وکیل امجد پرویز نے دوسرے روز دلائل میں کہا نواز شریف لندن فلیٹس کے مالک ہیں نہ ہی 1993 سے قابض ہیں۔

کسی مرحلے پر شریف فیملی کا تو پراپرٹی سے تعلق ہوسکتا ہے مگر میاں صاحب کا نہیں۔

انہوں نے یہ بھی بتایا کہ کویئن بینچ کے فیصلے کی کاپی قابل قبول شہادت ہے نہ ہی مریم اور کیپٹن صفدر کا اس فیصلے سے کوئی تعلق ہے۔

سماعت کے دوران وکیل اور نیب پراسیکیوٹر کے درمیان گرما گرمی بھی دیکھی گئی۔ نیب کے ڈپٹی پروسیکیوٹر جنرل سردار مظفر نے کہا وکیل صفائی وقت ضائع کررہے ہیں۔ جس پر امجد پرویز نے الٹا وار کیا اور بولے مجھے نہ بتائیں کہ کیسے دلائل دوں۔

احتساب عدالت میں باپ بیٹی کی جانب سے سات روز کیلئے حاضری سے استثنا کی استدعا کی گئی ۔ ساتھ کلثوم نواز کی اسکین شدہ میڈیکل رپورٹ بھی پیش کردی گئی۔

جج محمد بشیر نے صرف ایک دن کا استثنا دیدیا ۔ کہا تصدیق شدہ رپورٹ آنے کے بعد ہی درخواست دیکھیں گے۔

عدالت نے امجد پرویز کو جلد اپنے دلائل مکمل کرنے کی ہدایت کی۔ جبکہ العزیزیہ ریفرنس میں استغاثہ کے گواہ واجد ضیا کو بھی منگل کوطلب کرلیا گیا۔

MARYAM NAWAZ

NAB court

London Flats