بغاوت کےمقدمےکی درخواست پر،شاہد خاقان کودوبارہ نوٹس جاری

لاہور ہائي کورٹ نے شاہد خاقان عباسي کو بغاوت کے مقدمے کي درخواست پر دوبارہ نوٹس جاري کرديا۔ سابق وزيراعظم کا مؤقف تھا کہ اُنہيں پہلا نوٹس نہيں ملا، وہ تو اپني نااہلي چيلنج کرنے کے لئے عدالت آئے تھے۔

لاہور ہائی کورٹ راول پنڈی بینچ کے جسٹس طارق محمود عباسی نے درخواست پر سماعت کی۔ سماعت منگل کو لاہور ہائیکورٹ راولپنڈی بینچ میں ہوئی، شاہد خاقان عباسی کے خلاف توہین عدالت کی درخواست ملک ریاض انجم نے دائر کی ہے۔

 

شاہد خاقان عباسی اور نواز شریف کے خلاف غداری کی کارروائی کیلئے درخواست پر سرل المیڈا کو طلبی کا نوٹس جاری کر دیا گیا۔ سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی عدالت کے روبرو پیش ہوئے۔

 

درخواست میں موقف اختیار کیا گیا کہ نواز شریف نے متنازعہ انٹرویو دیکر ملک و قوم سے غداری کی، شاہد خاقان عباسی نے قومی سلامتی کمیٹی کی کارروائی سابق وزیر اعظم کو بتا کر حلف کی پاسداری نہیں کی، لہٰذا دونوں رہنماؤں کے خلاف بغاوت کی کارروائی کی جائے۔

 

سماعت کے دوران شاہد خاقان عباسی نے موقف اپنایا کہ انہیں عدالت کا نوٹس موصول نہیں ہوا، وہ ایپلیٹ ٹربیونل کے فیصلے کے خلاف لاہور ہائیکورٹ آئے تھے۔ عدالت نے سرل المیڈا کو طلبی کا نوٹس جاری کرتے ہوئے کیس کی سماعت ستمبر تک ملتوی کر دی۔

Article 6

Cyril Almeida

indictment

Tabool ads will show in this div