میرا نام ای سی ایل میں نہیں، زلفی بخاری

[video width="640" height="360" mp4="https://i.samaa.tv/wp-content/uploads/sites/11//usr/nfs/sestore3/samaa/vodstore/urdu-digital-library/2018/06/NAB-Court-Zulfi-Arrival-Isb-25-06.mp4"][/video]

پی ٹی آئی چیئرمین عمران خان کے قریبی دوست زلفی بخاری کا کہنا ہے کہ میرا نام ایگزیٹ کنٹرول لسٹ (ای سی ایل) میں نہیں ہے، اس حوالے سے ابھی تفتیش ختم نہیں ہوئی، چل رہی ہے، جو بھی عدالتی فیصلہ ہوگا،میڈیا کو آگاہ کردیا جائے گا، ابھی تو شروعات ہیں، آگے آگے دیکھیں کیا ہوتا ہے۔

اس سے قبل آف شور کمپنیوں کی انکوائری کے معاملے میں عمران خان کے قریبی دوست زلفی بخاری نیب راول پنڈی کے دفتر پہنچے۔ نیب کی مشترکا تحقیقاتی ٹیم نے آف شور کمپنیوں کے ذرائع آمدن کا سوال نامہ زلفی بخاری کے حوالے کیا۔

سوالنامے میں 6 آف شور کمپنیوں کے ذرائع آٓمدن کے حوالے سے متعلق پوچھا گیا۔ واضح رہے کہ اسلام آباد ہائ یکورٹ نے زلفی بخاری کو نیب انکوائری میں شامل ہونے کا حکم دیا تھا۔

زلفی بخاری کا کہنا تھا بلیک لسٹ کا کوئی قانون موجود نہیں، مجھے نہیں پتا تھا کہ میرا نام بلیک لسٹ میں ہے۔ ایف آئی اے سے پوچھا جائے کہ انہوں نے میرا نام کیوں ڈالا۔ انہوں نے بتایا کہ ان کی 6 آف شور کمپنیاں تھیں جس کے حوالے سے نیب کی جانب سے تحقیقات کی جا رہی ہے تاہم مجھ پر کرپشن کا الزام غلط ہے۔ میں نے نیب کے ساتھ ہر لحاظ سے تعاون کیا ہے۔

یہاں یہ بات بھی قابل ذکر ہے کہ اس سے پہلے رواں سال فروری میں زلفی بخاری کو سمن جاری کیا تھا کہ وہ نیب میں پیش ہوکر اپنی آف شور کمپنیوں کی تفصیلات پیش کریں مگر وہ نیب راول پنڈی میں پیش ہونے کی بجائے لندن چلے گئے تھے جس پر ان کا نام بلیک لسٹ میں ڈال دیا گیا۔ نیب راولپنڈی نے زلفی بخاری کو 25 جون کو ریکارڈ سمیت پیش ہونے کی ہدایت کی تھی ۔

PTI

IMRAN KHAN

ECL

black list

ZULFI BUKHARI

Tabool ads will show in this div