زعیم قادری نے ن لیگ سے بغاوت کی وجہ بتادی

مسلم لیگ ن کے سرکردہ رہنما زعيم قادری بغاوت پر مجبور کيوں ہوئے؟ سماء کے پروگرام آواز ميں سب بتا ديا ۔ تحريکِ انصاف کي جانب سے پارٹي ميں شموليت کي پيشکش کی تصدیق بھی کی جبکہ پروگرام نديم ملک لائيو ميں بولےکہ میرے خلاف وہی گروپ سرگرم ہے جوچوہدری نثار کے خلاف تھا۔

سما کے پروگرام آواز میں میزبان شہزاد اقبال نے سوال کیا کہ آپ سے کوئي وعدہ کيا گيا تھا ؟ کوئي کمٹمنٹ تھي پارٹي کي کہ اين اے 133 کا ٹکٹ آپ کو ديا جائے گا؟۔

جس پر زعیم قادری نے جواب دیا کہ جی، کمٹمنٹ کس نے کی تھی اس پر زعیم قادری نے بتایاکہ انہی دونوں صاحبان نے یعنی شہباز شریف اور حمزہ شہباز نے۔

زعیم قادری کا کہنا تھا کہ لوٹوں سے کیا شکوہ، دکھ تو قيادت نے ديا ہے۔میں نے تمام قربانیاں اورجدوجہد میاں نوازشریف کیلئے کی مگرانہوں نے مجھے آٹھ برس تک پوچھا ہي نہيں کہ تم زندہ بھي ہو يا مرگئے ہو۔ ہزار کوششيں کيں کہ ان سے ملوں ليکن ميري ملاقات نہيں ہوسکی۔

زعیم قادری نے تحريک انصاف کي جانب سے پارٹي ميں شموليت کي پيشکش کي بھي تصديق کرتے ہوئے واضح کیا کہ وہ اليکشن آزادانہ حيثيت ميں ہي لڑٰيں گے۔

البتہ شمولت کی پیشکش پرپی ٹی آئی کے حد درجہ شکر گزار ہوتے ہوئے بولے کہ ميرے پاس الفاظ نہيں ہيں کہ ميں کس طرح خان صاحب کا شکريہ ادا کروں ۔ ميں نے ساري ان کي مخالفت کي ہے۔

اس سے قبل سماء کےپروگرام نديم ملک لائيو ميں زعيم قادري پارٹي کے سازشي عناصرکي نشاندہي بھي کرتے ہوئے بولے کہ یہ ايک ہي گروپ ہے جس نے چوہدري نثار کے ساتھ يہ کچھ کيا اسي نے میرے ساتھ بھی یہ کیا۔

زعيم قادري نے یہ بھی کہا کہ وہ چوہدري نثار کي ہربات کي تائيد کرتے ہيں ۔

PTI

PML N

Zaeem Qadri

Awaaz

Tabool ads will show in this div