بلوچستان میں کاغذات نامزدگیاں منظوراورمسترد کرنے کا سلسلہ جاری

الیکشن 2018 کے لیے ملک بھر کی طرح بلوچستان میں بھی کاغذات نامزدگیوں پر فیصلے سنائے جانے کا سلسلہ جاری ہے  

این اے272 اور پی بی 50 سے بلوچستان عوامی پارٹی کے مرکزی صدر جام کمال خان،260 نصیر آباد سے بی اے پی کے رہنما خالد خان مگسی،پی ٹی آئی کے سردار خان رند , جمعیت کے مولانا عبد اللہ جتک اور شہناز بلوچ کے کاغذات نامزدگی منظور ہوگئے ہیں۔حلقہ این اے269  اور پی بی 38 سے پاکستان مسلم لیگ ن کے مرکزی رہنماء اور سابق وزیراعلی بلوچستان نواب ثناءاللہ خان زہری کے کاغذات نامزدگی جانچ پڑتال کے بعد منظور کر لیے گئے ہیں۔

پی بی 12 تمبو سے بی اے پی کے رؤف لہڑی،پی بی 11 ڈیرہ مراد جمالی سے ایم ایم اے کے ابراہیم ابڑو اور آزاد امیدوار واحد بخش بنگلزئی پی بی 50 لسبیلہ سے پی پی پی کے حسن جاموٹ کے کاغذات جانچ پڑتال کے بعد منظور کر لئے گئے۔

مسلم لیگ ن  بلوچستان کے صدر جنرل ر عبدالقادربلوچ کے کاغذات نامزدگی این اے 265 کوئٹہ سے مسترد کئے گئے ہیں،آر او کے مطابق ان کے متبادل امیدوار کا تعلق این اے 265 سے نہیں تھا۔وہیں پی بی 42 خاران سے بی اے پی کے نائب صدر میر شعیب نوشیروانی ،پی بی 13 جعفر آباد سے بی اے پی رہنما میر فائق جمالی کے کاغذات کو بھی مسترد کیا گیا ہے ان پر نیب میں جاری مقدمات کی وجہ سے کاغذات کو مسترد کیا گیا ہے۔

واضح رہے کہ انتخابی امیدواروں کے کاغذات نامزدگی کی جانچ پڑتال کا آج آخری روزہے۔ الیکشن کمیشن کے ترمیم شدہ انتخابی شیڈول کے مطابق آراوز کے فیصلوں کیخلاف اپیلیں22جون تک دائرہوسکیں گی۔

اپیلیں27جون کونمٹائی جائیں گی اورامیدواروں کی فہرست28جون کوشائع کی جائےگی جب کہ امیدواروں کی حتمی فہرست30جون کوشائع کی جائےگی جس کے بعد 25 جولائی کو عام انتخابات ہوں گے۔

 

Eelection Commission

Nomination Forms

Eelection 2018

Tabool ads will show in this div