مریم نواز نے این اے ایک سو پچیس سے کاغذات نامزدگی جمع کرادیئے

مريم نواز کاغذات نامزدگی کي جانچ پڑتال کیلئے عدالت پہنچیں تو ان آمد سے قبل سيکیورٹي کے انوکھے اقدامات کیے گئے، سراغ رساں کتوں نے کمرہ عدالت میں انٹری دیدی، کمرہ عدالت ہی نہیں جج کی کرسی کے نیچے بھی جاگھسے جس پر کمرے میں موجود دیگر امیدواروں نے بھرپور احتجاج کیا ۔

اين اے ايک سو پچيس سے کاغذات نامزدگي کي جانچ پڑتال کے معاملہ پر عدالتي عملے کا وقت سے پہلے مریم نواز کے کاغذات کی جانچ پڑتال سے انکار کردیا، عدالتي عملے نے کہا آپ کو ايک بجے کا وقت ديا گيا ہے، مریم نواز کا کہنا تھا والدہ کي عيادت کے لئے کل لندن جانا ہے، ميري حاضري لگاليں،وکلاءکي ٹيم موجود رہے گي۔

اس موقع پر مريم نواز نے شيخ رشيد کي اہليت کے فيصلے کے سوال پر رد عمل ديتے ہوئے کہا کہ آج کے فيصلے کوسننا بھي گوارا نہيں کيا، پورے پاکستان کومعلوم تھا فيصلہ کيا آئے گا، اسي نظام کے لئے نوازشريف آج کھڑے ہيں۔

انہوں نے کہا کہ نواز شریف اپنے اور بيٹي کے مقدموں کاسامنا کررہا ہے، وزيراعظم کو ٹشو پيپرکي طرح پھينکنے کي روايت کيخلاف ہيں ، آمر کو کاغذات نامزدگي جمع کرانے کي اجازت دي گئي، کروڑوں ووٹ لينے والا نااہل ٹھہرا۔

 

ECP

PML N

MARYAM NAWAZ

Election 2018

Nomination paper

Tabool ads will show in this div