روپے کی قدر کم کرکے درست فیصلہ کیا گیا، مفتاح اسماعیل

Jun 12, 2018

انٹربینک مارکیٹ میں کاروباري ہفتے کے دوسرے دن ڈالر کی قیمت میں مزيد اضافہ ہوگيا، کاروبارکا آغاز ہوتے ہي ڈالر ايک روپے چاليس پيسے اضافے کے ساتھ ايک سو بائیس روپے کا ہوگيا۔

دو دن ميں ڈالر کي قدر ميں پانچ روپے پينسٹھ پيسے کا اضافہ ديکھا گيا جس سے قرضوں کے بوجھ ميں پانچ سو ارب روپے سے زائد کا اضافہ ہوگيا ہے، روپے کي گرتي قدر کے باعث بيروني قرضوں کے حجم ميں اضافے سے عوام پر ٹيکسوں کے نئے بوجھ اور بالواسطہ مہنگائي کے خدشات نے سراُٹھا ليا ہے، پاکستان پرپہلے ہي قرضوں کا شديد بوجھ ہے جو تقريباً نوّے ارب ڈالر ہے۔

نون ليگ حکومت ميں مشير خزانہ مفتاح اسماعيل نے روپے کي ناقدري کو درست اقدام قرار دے ديا، کراچي ميں کاغذاتِ نامزدگي جمع کرانے کے بعد ميڈيا سے گفتگو ميں بولے کہ ڈالر کي قدر ميں اضافہ کرکے درست فيصلہ کيا گيا اس سے برآمدات ميں اضافہ ہوگا ۔

ان کا کہنا تھا کہ روپے کي قدر کم کرکے درست فيصلہ کيا گيا، فيصلہ ضروري تھا، کل مارکيٹ ميں روپيہ بہت زيادہ مستحکم تھا، صورتحال کنٹرول ہوجائيگي،روپے کي ناقدري صنعت کيلئے اچھا ہے، روپے کي قدر ميں کمي سے برآمدات ميں اضافہ ہوگا۔،

عالمي منڈي ميں تيل کي قيمتوں ميں اضافےکانوازشريف سےتعلق نہيں 10 سال ميں پہلي بارمعيشت5.8فيصد ترقي کرےگي،زرعي ترقي 3.8 اورلارج اسکيل انڈسٹري کي ترقي6فيصد رہےگي، سابق مشير خزانہ نے دعويٰ کیا کہ رواں سال ايکسپورٹ بڑھ جائے گي۔

FOREIGN CURRENCY

Inter bank

Miftah Ismail

Tabool ads will show in this div