تجارتی خسارہ تاریخ کی بلندترین سطح پر پہنچ گیا

پاکستان کا تجارتی خسارہ تاریخ کی نئی بلندیوں پرپہنچ گیا۔ رواں ماہ ختم ہونے والے مالی سال میں اب تک خسارہ چونتیس ارب ڈالر کے قریب پہنچ گیا ۔ 

وفاقی ادارہ شماریات کے مطابق رواں مالی سال تجارتی خسارے میں تیرہ اعشاریہ چار فیصد اضافہ ہوا۔ جولائی دوہزار سترہ سے مئی دو ہزار اٹھارہ میں اکیس ارب چونتیس کروڑ ڈالر کی مصنوعات برآمد کی گئیں جبکہ اس دوران درآمدات کا حجم پچپن ارب تئیس کروڑ ڈالر تک پہنچ گیا۔ یوں تجارتی خسارہ تینتیس ارب اٹھاسی کروڑ ڈالرہوگیا۔ گزشتہ مالی سال اسی مدت کے دوران تجارتی خسارہ انتیس ارب اٹھاسی  کروڑ ڈالر رہا تھا۔ وفاقی ادارہ شماریات کے مطابق رواں مالی سال اب تک برآمدات میں پندرہ اعشاریہ دو آٹھ فیصد اضافہ ہوا جبکہ درآمدات میں اضافہ چودہ اعشاریہ ایک دو فیصد رہا۔

ماہرین کے مطابق عالمی منڈی میں تیل کی قیمتوں میں اضافے اور ڈالر مسلسل مہنگا ہونے کی وجہ سے بھی پاکستان کا درآمدی بل بڑھ رہا۔

trade deficit

Tabool ads will show in this div