انتخابات 2018 کےلیےانتظامات فائنل کرنےکےلیےاہم اجلاس اگلےہفتے طلب

Jun 06, 2018

[video width="640" height="360" mp4="https://i.samaa.tv/wp-content/uploads/sites/11//usr/nfs/sestore3/samaa/vodstore/urdu-digital-library/2018/06/Ecp-Activities-Overall-Isb-Pkg-06-06.mp4"][/video]

انتخابات 2018 کے سکیورٹی انتظامات فائنل کرنے کیلئے اہم بیٹھک آئندہ ہفتے بلا لی گئی۔ان مٹ سیاہی کے 4 لاکھ سے زائد مارکرز اور 5 لاکھ سے زائد اسٹیمپ پیڈز کی تیاری کا حکم دے دیاگیا ۔الیکشن کمیشن نے بلوچستان کے 5 اضلاع کی حلقہ بندیوں پر اعتراضات مسترد بھی کردیئے ہیں ۔

جولائی 2018 کے عام انتخابات کےلیے الیکشن کمیشن کی تیزی سے پیش قدمی جاری ہے۔سکیورٹی انتظامات کیا ہونگے؟ کن پولنگ اسٹیشنز پر پولیس، کہاں کہاں رینجرز اور کس کس جگہ فوج تعینات ہوگی ۔؟

سی سی ٹی وی کہاں کہاں نصب ہونگے؟ حتمی فیصلے کیلئے اجلاس آئندہ ہفتے طلب کرلیاگیاہے۔وزارت داخلہ کےحکام اورصوبائی چیف سیکرٹریز کو متعلقہ تفصیلات سمیت بلا لیا گیا ۔

پولنگ ڈے کیلئے پی سی ایس آئی آر کو انمٹ سیاہی تیار کرنے کی ہدایت جاری کردی گئی ہےجس کے4 لاکھ سےزائدمارکرز اور 5 لاکھ سے زائد اسٹیمپ پیڈزدرکار ہونگے ۔دولاکھ مارکرز اور 3 لاکھ اسٹیمپ پیڈز کی ضرورت پنجاب میں ہوگی۔ سندھ کو 94 ہزار مارکراور ایک لاکھ 32 ہزار پیڈز چاہئیں۔

کے پی کو 62 ہزار، بلوچستان کو 20 ہزار سے زائد مارکرز درکار ہونگے۔الیکشن کمیشن نے بلوچستان کے5 اضلاع ضلع خاران،واشک،پنجگور،موسیٰ خیل اورشیرانی کی حلقہ بندیوں پراعتراضات مسترد کردئیےجبکہ کوئٹہ کےحلقہ پی بی 24 سے32  تک حلقہ بندیوں پرسماعت جمعرات 7 جون تک ملتوی کردی گئی ۔

Election 2018

Tabool ads will show in this div