ہنزہ : میاچھر نگر کی زمین سرکنے لگی، لوگوں کی محفوظ مقام پر منتقلی

اسٹاف رپورٹ


ہنزہ : ہنزہ کے گاؤں میاچھر نگر کے گرد خطرات منڈلانے لگے، تیزی سے سرکنے والی زمین کے باعث عطاء آباد جھیل جیسی صورتحال پیدا ہونے کا خدشہ ہے، 50 سے زیادہ خاندانوں کو محفوظ مقام پر منتقل کردیا گیا ہے۔


ذرائع کے مطابق میاچھر گاؤں کا ایک حصہ صفحہ ہستی سے مٹنے کا خدشہ پیدا ہوگیا، گلگت بلتستان میں ایک اور عطاء آباد جھیل بننے کا خطرہ منڈلانے لگا۔


دریائے ہنزہ کے قریب موجود گاؤں میاچھر نگر میں زمین تیزی سے سرک رہی ہے، جگہ جگہ گڑھے پڑگئے ہیں جہاں زمین میں پڑنے والی دراڑیں 10 انچ تک بڑھ چکی ہیں، لوگوں کی محفوظ مقام پر منتقلی کا عمل بھی تیز کردیا گیا ہے۔


اسسٹنٹ کمشنر ہنزہ امیر خان کے مطابق جیولوجیکل سروے پاکستان کی ٹیمیں کل سے کام شروع کریں گی جس کے بعد ہی بہتر منصوبہ بندی کی جاسکے گی۔


ماہرارضیات کا کہنا ہے کہ زمین سرکنے کی صورت میں 3  سے 400 میٹر اونچی دیوار دریا ہنزہ کا راستہ روک لے گی، 40 کلومیٹر تک شاہراہ قراقرم زیر آب آسکتی ہے، اگر لینڈ سلائیڈنگ سے پہلے ٹنل بنالیا جائے تو پانی کا بہاؤ برقرار رہ سکتا ہے۔ سماء

کی

Disney

پر

sp

doha

Tabool ads will show in this div