تھر میں مزید 5 بچے جاں بحق، تعداد 13 ہوگئی

تھرپارکر میں غذائی قلت کے باعث 2 روز ميں 13 بچے جان سے گئے، جبکہ 100 سے زائد مختلف اسپتالوں ميں زیر علاج ہیں۔

تھر میں شدید گرمی، پانی اور غذائی قلت نے دو روز میں مزید 13 بچوں کی جان لے لی جبکہ 100 سے زائد بچے اسپتالوں میں زیر علاج ہیں۔

تھر کے ديہی علاقے علاج کی سہوليات سے محروم ہیں، سندھ حکومت کی جانب سے اعلان کردہ امدادی گندم کی تقسيم بھی بند کردی گئی۔

سول سرجن ڈاکٹر امیر شاہ کا کہنا ہے کہ تھر میں غذائی قلت کا سامنا ہے، ہمارے پاس اسپتال میں اسپیشلسٹ کی بھی کمی ہے، 19 نرسز کی ضرورت ہے تاہم صرف 9 تعینات ہیں۔

HEALTH

Children Death

Tabool ads will show in this div