رمضان میں صنعتوں کو رات بھر لوڈ شیڈنگ کا سامنا ہوگا

رمضان میں گھریلو صارفین کو بجلی کی بلا تعطل فراہمی کے لئے صنعتوں کو رات بھر لوڈ شیڈنگ کا سامنا ہوگا،صنعتکار کہتے ہيں بجلي کي قلت کي وجہ سے دس لاکھ سے زائد صنعتي مزدور بے روز ہو نے کا خدشہ ہے۔

حکومت کے پانچ سال ختم ہوگئے مگر صنعتوں کا مقدر نہ بدلا، رمضان ميں صنعتوں کو اس بار بھي لوڈ شيڈنگ کا سامنا ہوگا، پنجاب ميں ٹيکسٹائل ملوں کو شام چھ بجے سے صبح چار بجے تک بجلي نہيں ملے گي، صنعتکاروں کے مطابق بجلي نہ ملنے سے ملوں ميں ايک شفٹ کا کام روکنا پڑے گا۔

گروپ ليڈر آل پاکستان ٹيکسٹائل ملز ايسوسي ايشن گوہر اعجاز کا کہنا تھا کہ پانچ سال پہلے موجودہ حکومت نے پنجاب کے نام پر انتخابات جيتے تھے، مگر بجلي اور گيس کے معاملے ميں صورت حال جوں کي توں ہے۔

چيرمين ايپٹما پنجاب علي پرويز ملک کا کہنا تھا کہ ہم کل دوپہر ايک بجے اسلام آباد ميں مفتاح اسماعيل سے ملاقات کريں گے، کوشش ہے کہ حکومت جاتے جاتے ہي کوئي اچھا کام کر جائے۔

مل مالکان کا ايک وفد کل وفاقي وزير خزانہ سے ملاقات کرکے انہيں مسائل سے آگاہ کرے گا۔

صنعتکاروں کو خدشہ ہے کہ توانائي کا بحران ختم نہ ہوا تو برآمدات ميں اضافے کي کوششيں کامياب نہيں ہوسکيں گي ۔

load shedding

INDUSTRIES

Tabool ads will show in this div