اسرائیلی فوج کی فائرنگ، شہداء کی تعداد 38 ہوگئی

May 14, 2018

امریکا نے اسرائیل میں اپنا سفارتخانہ تل ابیب سے مقبوضہ بیت المقدس متنقل کردیا،  افتتاحٰ تقريب ميں اسرائيلی وزيراعظم نے امريکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ سے اظہار تشکر کیا، فلسطینی صدر نے امریکی سفارتخانے کی منتقلی کی مذمت کردی۔ غزہ میں مظاہرہ کرنے والوں کو اسرائیلی فوج نے خون میں نہلا دیا، اندھادھند فائرنگ سے شہید فلسطنیوں کی تعداد 38 ہوگئی، پی ایل او نے کل پورے فلسطين ميں ہڑتال کا اعلان کردیا۔

مقبوضہ بيت المقدس ميں امريکی سفارتخانے کے افتتاح پر غزہ ميں فلسطينيوں نے شديد احتجاج کیا، اسرائيلی فوج کی فائرنگ سے شہيد افراد کی تعداد 38 ہوگئی۔

غزہ سرحد کے قريب مظاہرے پر اسرائيلی فوج کی وحشيانہ فائرنگ نے سب سے پہلے 21 سالہ نوجوان انس ہمدان کو نشانہ بنايا، خان يونس ميں مظاہرین پر اسرائيلی فوج مسلسل حملے کرتی رہی، فائرنگ کے واقعات میں 38 افراد شہید اور سیکڑوں زخمی ہوگئے۔

غزہ حکام نے کہا ہے کہ اندھا دھند فائرنگ سے 500 افراد زخمی ہوئے، فلسطينی مظاہرين مقبوضہ بيت المقدس ميں امريکی سفارتخانے کے افتتاح پر شديد رنج و غم کا اظہار کررہے تھے۔

امریکی صدر نے چند ماہ قبل اپنا سفارتخانہ تل ابیب سے بیت المقدس منتقل کرنے کا اعلان کیا تھا جس پر عالمی سطح پر کافی تنقید کی گئی تھی۔

فلسطین اور اسرائیل کے درمیان تنازع کا بنیادی نکتہ بیت المقدس ہے، 1993ء کے معاہدے کے مطابق بیت المقدس کی ملکیت کا فیصلہ ابھی ہونا باقی ہے۔

USA

Israeli-Palestinian conflict

Tabool ads will show in this div