عمران خان نے کراچی کیلئے دس نکات پیش کردیے

 پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے کراچی کو عظیم شہر بنانے کیلئے دس نکات پیش کردیئے۔

کراچی کے الہٰ دین پارک میں جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے کہا کہ ساری سیاسی تحریکیں کراچی سے شروع ہوتی ہیں ، پاکستان کے مسائل حل کرنے کے لیے سب سے پہلے کراچی کی عوام اٹھتی ہے، دس نکات دوں گا جس سے کراچی ایک عظیم شہر بنے گا۔

عمران خان نے کہا کہ جب کراچی اوپر جاتا ہے تو پاکستان اوپر جاتا ہے، میں نے کبھی سوچا ہی نہیں کہ میں فیل ہونگا، کبھی ہار نہیں مانتا تھا، میری زندگی سے ایک چیز سیکھو کہ بڑے خواب دیکھو، جب سیاسی جماعت بنائی سب نے مذاق اڑایا 10 سال تک مذاق اڑایا گیا،اور اب پاکستان تحریک انصاف کی مقبولیت سب کے سامنے ہے، انہوں نے کہا کہ میں چاہتا ہوں کہ کراچی والے بڑی سوچ رکھیں بڑے خواب دیکھیں،اپنے خواب کی تعمیل کے لیے کشتیاں جلا کر گیا، یہ قائداعظم اور اقبال کا پاکستان نہیں یہاں پر لوگوں پر بانٹا جاتا ہے۔

عمران خان کا کہنا تھا کہ  سارے ادارے سیاسی مداخلت سے تباہ کر ديئے گئے،سیاسی بھرتیوں سے آہستہ آہستہ ہم تنزلی کا شکار ہوئے، زرداری اور نواز شریف نے خوب تباہی پھیلائی، آج ہمارے ادارے مضبوط نہیں ہیں،سب سے پہلے بدعنوانی پر قابو پانا ضروری ہے،ملک قرضے میں ڈوبا ہوا ہے اور اربوں ڈالر باہر جا رہے ہیں۔ زرداری اور نواز شریف کچھ اس لیے نہیں کر پائے کیونکہ وہ خود اس میں ملوث تھے۔

انہوں نے کہا کہ اس ملک میں بے حسی ہے،کوئی فکر نہیں ہے کیا ہورہا ہے،سنگاپور اور ملائيشيا بڑی تیزی سے آگے گئے،مجھے مہاتیر محمد نے کہا کہ خیال رکھنا،جس ملک کے وزيرکرپشن پر لگ جائيں،وہ ملک ترقی نہيں کريگا، ملک کے اداروں کو تباہ کرديا گيا، ميرٹ ختم کرکے سياسي طور پر بھرتياں کروائي گئيں، اليکشن جيت کر سب سے پہلے کرپشن کا خاتمہ کريں گے۔

عمران خان کا کہنا تھا کہ آج نواز شریف نے بیان دیا، ممبئی حملے میں پاکستان سے لوگ گئے تھے، نواز شریف سے پوچھنا چاہتا ہوں کہ اپنے دور حکومت میں یہ جانتے تھے تو کیوں ایکشن نہیں لیا، یہ بالکل ایسا ہے جیسے بلاول روز کہتا کہ میری ماں کے قاتلوں کو گرفتار کرو، میں بائیس سال سے اس میر جعفر اور میر صادق کے خلاف جنگ لڑتا رہا ہوں۔

کراچی کی بہتری کیلئے عمران خان کے 10نکات

پہلہ نکتہ : کراچي پہلا مسئلہ ہے کہ پاني نہيں، کوئي پلاننگ نہيں ہوئي،کرپشن کے مافياز بيٹھے ہوئے ہيں، سب سے پہلے کراچي کا ايڈمنسٹريشن سسٹم تبديل کريں گے، تمام شہروں ميں ميئر کا ڈائريکٹ اليکشن کروائيں گے۔

دوسرا نکتہ : عمران خان نے کراچی کے لیے اپنے دوسرے پوائنٹ کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ وہ شہر میں نظام تعلیم کو بہتر کریں گے، سرکاری تعلیمی اداروں کا معیار بہتر بنائیں گے تاکہ غریب کے بچوں کو بھی بہترین تعلیم ملے، چیئرمین پی ٹی آئی نے کہا کہ وہ کراچی میں عالمی معیار کی یونیورسٹیاں تعمیر کریں گے۔

تیسرا نکتہ : چیئرمین پی ٹی آئی نے کہا کہ اقتدار میں آنے کے بعد وہ کراچی میں صحت کا نظام بھی بہتر کریں گے اور سرکاری اسپتالوں میں اصلاحات کریں گے، عمران خان نے کہا کہ خیبر پختونخوا میں سرکاری اسپتالوں میں اصلاحات کیے ہیں اور انہیں عالمی معیار کے مطابق ڈھال رہے ہیں۔

چوتھا نکتہ : چوتھا بڑا مسئلہ پولیس کا ہے یہاں پولیس لوگوں کو تحفظ فراہم کرنے کے بجائے ماورائے عدالت قتل کرتی ہے، میں بچوں کی تقریر نہیں سنتا تاہم آج بلاول کی تقریر سنی ، بلاول آنے والے وقت میں الطاف حسین ہوگا ،کہا جاتا ہے راؤانوار جيسے پوليس آفيسرنے چارسولوگ قتل کئے اور زرداري اس کي تعريف کررہے ہيں، راؤ انوار کے حوالے سے بلاول اپنے والد سے پوچھو، کے پی پولیس نے کوئی ماروائے عدالت قتل نہیں کئے ، بلاول بیٹا زرا چیک کرو کہ ہم نے کتنے لوگوں کے خلاف ایف آئی آر کٹوائی ہے۔

پانچواں نکتہ: بزنس کے لیے وہ ترقی لائیں گے کہ اخراجات کم ہوں،ہم چاہتے ہیں بے روزگاری ختم ہو، نوکریاں ملیں،بزنس بڑھے،یقین دلاتے ہیں بزنس کے لیے انڈسٹریل زونز بہتر کریں گے، سندھ میں بی بی فریال تالپور پیسے لے کر پولیس ميں بھرتی کرتی ہے۔

چھٹا نکتہ: بجلی کامسئلہ،کے الیکٹرک اور ایس ایس جی سی آپس میں لڑ رہے ہیں،کراچی میں لوگوں کا گرمی سے برا حال ہے،کے الیکٹرک کی ذمہ داری حکومت لے گی،بجلی چوری کی قیمت عوام مہنگی بجلی سے دیتی ہے، ہم سستی بجلی عوام کو فراہم کریں گے۔

ساتواں نکتہ: نوجوانوں کے لئے ہمارے پینسٹھ فیصد نوجوان تیس سال سے کم عمر ہيں، ہمارے نوجوانوں کے لئے کھیلنے کے گراؤنڈ نہیں ہے، لاہور کی ٹیموں کی کراچی کی ٹیمیں پھینٹی لگاتی تھی ، اس شہر کے لئے ہم گراؤنڈز بنائیں گے۔

آٹھواں نکتہ : پاکستان سات نمبر پر ہے جہاں گلوبل وارمنگ کا خطرہ ہے، کے پی کے میں ایک ارب درخت لگائے ہیں، کراچی سمیت ملک بھر میں اربوں درخت لگائیں گے، سیوریج کا پانی سمندر میں چھوڑا جارہا ہے سیوریج ٹریٹمنٹ پلانٹ لگائیں گے تاکہ پانی ری سائیکل ہوسکے۔

نواں نکتہ: کراچی میں ٹرانسپورٹ بہت ہے، یہاں سرکلر ریلوے بحال کریں گے، اورنج ٹرین کی ضرورت سب سے زیادہ کراچی کو ہے۔

دسواں نکتہ: بے روزگاری ایک بیماری ہے ايک باپ نے خودکشی کی کہ اس کے بیٹے کو نوکری مل جائے، نوجوانوں کو روزگار کی بحالی کے لیے اقدامات کریں گے انہیں سستے قرضے دیں گے اور نوکریاں پیدا کریں گے، ہم نچلے طبقے کے لوگوں کو اوپر اٹھائیں گے۔

 

PTI

IMRAN KHAN

Aladin Park

Tehreef insaaf

Tabool ads will show in this div