بھارت رقم بھیجنے کا معاملہ:نواز شریف نے 24 گھنٹے میں شواہد کا مطالبہ کردیا

سابق وزیراعظم نواز شریف نے مبینہ طور پر بھارت کو بھیجی جانے والی 5 ارب ڈالر کی رقم سے متعلق معاملے میں چیئرمین نیب سے 24 گھنٹے میں شواہد فراہم کرنے اور بصورت دیگر قوم کے سامنے معافی کا مطالبہ کردیا۔ کہتے ہیں ایک محب وطن پاکستانی پر ایسے گھٹیا اور مضحکہ خیز الزامات ناقابل برداشت ہیں۔ کہتے ہیں ایک محب وطن پاکستانی پر ایسے گھٹیا اور مضحکہ خیز الزامات ناقابل برداشت ہیں۔ مجھے وزرات عظمیٰ سے فارغ کرنا طے پا چکا تھا اس لیے خواہش پوری کی گئی۔ 

دو سال قبل ورلڈ بینک نے اپنی رپورٹ میں دعویٰ کیا تھا کہ پاکستان سے 4 ارب 90 کروڑ ڈالر کی خطیر رقم بھارت منتقل کی گئی ہے، تاہم اسٹیٹ بینک آف پاکستان نے ان خبروں کی سختی سے تردید کردی تھی۔ گزشتہ روز قبل نیب نے اپنے ایک بیان میں کہا تھا کہ سابق وزیراعظم نواز شریف کی جانب سے 4 ارب 90 کروڑ ڈالر بھارت منتقل کرنے پر تحقیقات شروع کردی گئی ہیں۔

اسی حوالے سے اسلام آباد کے پنجاب ہاؤس میں میڈیا کانفرنس کے دوران نواز شریف نے تمام الزامات کو یکسرمسترد کرتے ہوئے کہا کہ سنگین الزامات کا مقصد پاکستان کے سیاسی نظام کو خطرے میں ڈالنا ہے، 3 بار وزیراعظم رہنے والے نواز شریف پر الزام عائد کیا گیا کہ منی لانڈرنگ کے ذریعے5 ارب کی رقم ملک سے باہر بھیج کر زرمبادلہ کے ذخائر کو نقصان اور بھارت کو طاقتور بنایا گیا۔ 

نواز شریف نے کہا کہ محب وطن پاکستانی پر ایسے گھٹیا اور مضحکہ خیز الزامات ناقابل برداشت ہیں، احتساب کے نام پر قائم ہونے والاادارہ میرے خلاف من گھڑت الزامات کا مورچہ بنا چکا ہے جو کردار کشی اور میڈیا ٹرائل کی انتہائی مکروہ مثال ہے۔ نیب ریفرنس کا تعلق بھی ایسی ہی بے سروپا میڈیا رپورٹ سے ہے جسے پاناما پیپپرز کا نام دیا گیا تھا، دنیا میں کسی نے اسے توجہ کے لائق نہیں سمجھا،میں نے سپریم کورٹ سے خود کمیشن بنانے کی درخواست کی جسےخارج کردیا گیا، میرے مخالفین کی درخواست کو بھی بے معنی، لغو قرار دیکر خارج کیا گیا۔ پھر نہ جانے کیا ہوا۔ جے آئی ٹی سے نیب ریفرنس تک کی سیاہ کہانی پرآنے والی نسلیں بھی افسوس کرتی رہیں گی۔

مجھے وزرات عظمیٰ سے فارغ کرنا طے پاچکا تھا

نیب ریفرنس سے متعلق بات کرتے ہوئے نواز شریف نے کہا کہ میرے خلاف ایک پائی کی کرپشن ثابت نہیں ہوئی، وزارت عظمیٰ سے فارغ کرنا طے پاچکا تھا اس لیے اقامہ کو بنیاد بنا کر خواہش پوری کی گئی۔ بوگس مقدمے میں تقریبا 70 پیشیاں بھگت چکا ہوں جو ملکی تاریخ میں ایک ریکارڈ ہے۔ طوطے مینا کی کہانیوں سے کچھ نہیں نکلا تو نیا کیس بنا کر سزا دلوانے کی کوشش کی جا رہی ہے۔ پاناما کے بعد ورلڈ بینک کی رپورٹ کو بھی مسخ کر کے پیش کیا گیا۔

نیب پر سوالات اٹھائے ہوئے نواز شریف نے کہا کہ کسی اخبار کے 4 ماہ پہلے کے گمنام کالم کو بنیاد بنا کر بغیر کسی شواہد کے مجھے ملوث کرنا اس بات کا ثبوت ہے کہ نیب اپنی ساکھ کھوچکا ہے، اس کا کردار بےنقاب اور چہرہ مسخ ہو چکا ہے۔ چیئرمین نیب نے نہ صرف میری کردارکشی کی بلکہ قومی مفاد کو بھی ناقابل تلافی نقصان پہنچایا۔ کالم نگار، ورلڈبینک یا اسٹیٹ بینک سے معاملے سے متعلق کچھ پوچھا گیا؟ چیئرمین نیب کو رات کو پریس ریلیز جاری کرنے کی ایمرجنسی کیوں محسوس ہوئی؟۔

چیئرمین نیب سے معافی کا مطالبہ

نواز شریف نے مطالبہ کیا کہ چیئرمین نیب 24 گھنٹوں میں شواہد سامنے لائیں ورنہ کھلے تعصب پر قوم سے سرعام معافی مانگیں۔ وہ عہدےپر رہنے کا جواز کھو چکے ہیں، استعفیٰ دیکر گھر چلے جائیں۔ ہم نے اس حوالے سے قانونی مشاورت شروع کردی ہے جس کے بعد لائحہ عمل کا اعلان کریں گے۔

اپنی پریس کانفرنس میں نواز شریف نے کہا کہ یہ احتساب نہیں انتقامی کارروائیوں کا غیرمنصفانہ سلسلہ ہے، صف اول کے رہنماؤں کو مقدمات میں الجھایا جا رہا ہے مقصد جمہوریت کو کمزور کرنا اور ہمیں نشانہ بنانا ہے۔ انتخابات سے پہلے یہ سب شرمناک اور پری پول رگنگ ہے، ساکھ سے محروم ہونےو الے کسی معتصب ادارے کا لقمہ بننے کو تیار نہیں ہیں۔

نوازشریف نے پارلیمنٹ میں معاملہ اٹھانےپروزیراعظم کا مشکورہوتے ہوئے میڈیا اور سیاسی جماعتوں سے بھی امید ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ ملکی مفاد میں معاملے کو انصاف پسندی کی نظر سے دیکھا جائے گا۔

کسی سے معافی مانگنے یا رحم کی اپیل کرنے نہیں جاؤں گا

پریس کانفرنس کے بعد میڈیا سے گفتگو میں نوازشریف نے کہا کہ الیکشن میں مشکل سے تین مہینےرہ گئےہیں،جو کچھ ہورہاہےمیرے اورمیری جماعت کےخلاف سازش ہے۔ کل جو لوگ پی ٹي آئی میں شامل ہوئےوہ خودسے شامل نہیں ہوئے۔

انہوں نے کہا کہ ملک میں عجیب تماشابنتاجارہاہے،ہمارے لوگوں پرمقدمات بنائے جارہےہیں۔ میں کسی سے معافی مانگنے اوررحم کی اپیل کرنےنہیں جاؤں گا۔ ملک کےخلاف سازش کی جارہی ہے،یہ کہتے ہیں بندے تبدیل کرالو، کیایہ بچ جائیں گے؟۔ نیب کی نوےفیصد کارروائیاں ہمارے خلاف ہیں۔

خلائی مخلوق سے متعلق سوال پرنوازشریف نے کہا کہ اصل خلائی مخلوق سترسال سے موجودہے، جس کامقابلہ ابھی زمینی مخلوق سےہونے والاہے۔ زمینی مخلوق خلائی مخلوق کو شکست دے گی۔

مزید پڑھیے: نواز شریف کیخلاف منی لانڈرنگ کی تحقیقات: نیب کی وضاحت

انہوں نے کہا کہ میرے خلاف اگرکوئی ثبوت ہوتاتو دس روز میں فیصلہ آجاتا۔ جنہوں نے پارٹی چھوڑی ہےان سے پارٹی چھڑوائی گئی ہے۔ پیپلزپارٹی اورتحریک انصاف کاگٹھ جوڑکاثبوت موجودہے، عمران خان سے پوچھیں کہ آپ نےپیپلزپارٹی کےامیدوارکوووٹ دیا۔

 

money laundring

Nawaz Sharuf

Tabool ads will show in this div