مشرف پھرنہیں آئے،غداری کیس میں پیشی کیلئےمزیدمہلت مل گئی

اسٹاف رپورٹ
اسلام آباد : خصوصی عدالت نے سنگین غداری کیس میں سابق صدر پرویز مشرف کو پیش ہونے کیلئے اٹھارہ فروری تک کی مہلت دینے کا عندیہ دے دیا۔ حکم عدولی پر ناقابل ضمانت وارنٹ جاری کئے جائیں گے۔

خصوصی عدالت نے سماعت شروع کی تو پرویز مشرف ایک بار پھر پیش نہیں ہوئے۔ ایس پی رورل کیپٹن الیاس نے سابق صدر پرویز مشرف کے وارنٹ گرفتاری کی تعمیلی رپورٹ جمع کروائی۔ وکیل صفائی انور منصور نے عدالت کے استفسار پر وضاحت کی کہ وارنٹ کی تعمیل تحفظات کے ساتھ کی گئی ہے۔

انور منصور کا کہنا تھا کہ پرویز مشرف دانستہ حاضری سے گریز نہیں کر رہے، یہ خدشہ ہے کہ جیسے ہی وہ پیش ہوں گے ان پر فرد جرم عائد کر دی جائے گی۔ جسٹس فیصل عرب نے کہا کہ ملزم خود پیش ہو کر بھی اختیار سماعت کا فیصلہ ہونے تک فرد جرم مؤخر کرنے کی استدعا کر سکتا ہے۔ جس پر انور منصور نے کہا کہ اگر ایسا ہو تو وہ آئندہ پیشی پر پرویز مشرف کو حاضر کر دیں گے۔ عدالت اس وقت تک مہلت دے دے۔

پراسیکیوٹر ڈاکٹر طارق حسن نے استثنی کی درخواست کی مخالفت کی اور فوری ناقابل ضمانت وارنٹ جاری کرنے کی استدعا کی۔ عدالت نے قرار دیا کہ پرویز مشرف کے ضامن کو بھی طلب کر کے ملزم کی عدم پیشی کی وجوہات پوچھیں گے۔

جسٹس فیصل عرب نے ریمارکس دیئے کہ انور منصور کی بیرون ملک روانگی کے باعث پرویز مشرف کی حاضری اٹھارہ فروری تک مؤخر کی جا سکتی ہے۔ ڈاکٹر خالد رانجھا سے مقدمہ فوجی عدالت میں منتقل کرنے سے متعلق دلائل دس فروری کو سنیں گے تاہم اس حوالے سے تحریری حکم شام چار بجے جاری ہوگا۔ سماٰء

میں

کیس

negotiations

drinking

Tabool ads will show in this div