خواتین کیلئے توہین آمیز بیان، رانا ثناء اللہ کیخلاف اپوزیشن کا شدید احتجاج

[video width="640" height="360" mp4="https://i.samaa.tv/wp-content/uploads/sites/11//usr/nfs/sestore3/samaa/vodstore/urdu-digital-library/2018/05/Opposition-Protest-Lhr-Pkg-02-05.mp4"][/video]

رپورٹ : نعیم اشرف بٹ

رانا ثناء اللہ کے بيان پر اپوزيشن نے پنجاب اسمبلی ميں شديد احتجاج کيا، اپوزيشن نے ايوان ميں قرارداد لانے کا مطالبہ بھی کيا ليکن حکومتی ارکان جذباتی انداز ميں وزير قانون کا دفاع کرتے رہے۔

پنجاب اسمبلی میں اپوزیشن جماعتوں نے رانا ثناء اللہ کے خواتین سے متعلق بیان پر شدید احتجاج کیا، اور مطالبہ کیا کہ وزیر قانون کو عہدے سے ہٹایا جائے۔

نعروں کے بعد ايوان ارکان ميں پہنچے تو اسپيکر سے رانا ثناء اللہ کیخلاف قرارداد کی اجازت کا مطالبہ کرديا۔

محمود الرشید بولے کہ اگر رانا ثناء اللہ نے معافی نہ مانگی تو ان کیخلاف قرار داد لائیں گے۔

اپوزيشن کے جارحانہ انداز پر حکومتی ارکان نے بھی رانا ثناء اللہ کی خوب وکالت کی اور عائشہ گلالئی کا بلیک بیری چیک کرنے کا مطالبہ بھی کردیا۔

عائشہ گلالئی نے نے پی ٹی آئی چیئرمین عمران خان پر نازیبا ایس ایم ایس کرنے کا الزام لگایا تھا۔

مسلم لیگ ن کے رہنماء اور وزير قانون پنجاب رانا ثناء اللہ ايوان کی کارروائی سے غير حاضر رہے۔

PTI

RANA SANA ULLAH

PUNJAB ASSEMBLY

women

Mehmood ur Rasheed

Tabool ads will show in this div