دوران ریسلنگ نامناسب مناظرپرسعودی حکام نے معافی مانگ لی

سعودی عرب میں براہ راست ریسلنگ مقابلوں کے دوران خواتین ریسلرزکے نامناسب مناظر دکھائے جانے پرکھیلوں کے حکام نے عوام سے معافی مانگ لی۔

جدہ میں ڈبلیو ڈبلیو ای کے اشتراک سے منعقد کیے جانے والے گریٹسٹ رائل رمبل میں گو خواتین ریسلرز شامل نہیں تھیں لیکن دوران مقابلہ انہیں بڑی اسکرینوں پر تشہیری مہم کے تحت دکھادیاگیا، یہ مناظرسرکاری ٹی وی کے علاوہ سعودی عرب کے دیگر ٹی وی چینلز پر بھی دیکھے گئے تھے۔

ریسلنگ پر پابندی کے خاتمے کے باوجود سعودیہ میں خواتین کے مقابلے ممنوع ہیں ۔ اس ایونٹ کو دیکھنے کیلئے 60 ہزار شائقین خواتین اور بچے بھی موجود تھے جس کے باعث نامناسب مناطر نشر ہوجانے پرسرکاری ٹی وی نے انہیں فوری روکا لیکن تب تک سرکاری ٹی وی چینلز پر یہ دیکھے جا چکے تھے جبکہ عوام نے موبائل فونز سے تصاویر لیکر انہیں سوشل میڈیا پر بحی شئِیرکردیا تھا جس پر خوب تنقید ہوئی۔

کھیلوں کے حکام نے اس حوالے سے معذرت کرلی ہے۔ایونٹ میں نامی گرامی ریسلرز جان سینا، انڈر ٹیکر سمیت دیگر انٹرنیشنل ریسلرز نے شرکت کی۔

واضح رہے کہ سعودی عرب کے ڈبلیو ڈبلیو ای کے ساتھ کیے جانے والے دس سالہ معاہدہ کے تحت مختلف شہروں میں ریسلنگ کے عالمی مقابلے منعقد کیے جائیں گے جن میں عالمی شہرت یافتہ ریسلرز شریک ہوں گے۔

APOLOGY

Tabool ads will show in this div