تازہ ترین

گاڑی سے ٹکر،امریکی سفارتکار کیخلاف قانون کے تحت کارروائی ہوگی

اسلام آباد : قائم مقام نائب امریکی وزیر خارجہ ایلس ویلز اور سیکریٹری خارجہ تہمینہ جنجوعہ کے درمیان سفارت کاروں کی محدود نقل و حرکت پر کوئی پیش رفت نہ ہوسکی۔ پاکستان کی جانب سے اپنا مؤقف دہراتے ہوئے کہا گیا ہے کہ اس سلسلے میں ویانا کنونشن اور ملکی قوانین کے تحت کارروائی کی جائے گی، جب کہ دونوں جانب سے سفارتکاروں کی نقل و حرکت کو محدود کرنے کے مؤقف پر بھی برف نہ پگھل سکی۔

اسلام آباد میں دو روزہ دورے پر آئیں قائم مقام نائب امریکی وزیر خارجہ ایلس ویلز کے دورہ پاکستان کے دوران بھی دونوں ممالک کے درمیان برف نہ پگھل سکی۔ دونوں ممالک کے درمیان تناؤ بدستور برقرار رہا۔ سفارت کاروں کی نقل و حرکت محدود کرنے پر دونوں ممالک تاحال اپنے اپنے موقف پرقائم ہیں۔

 

ایلس ویلز کے دورہ سے پاک امریکا تناؤ میں کمی کی نہ آسکی، پاکستان نے امریکی سفارت کاروں کی نقل وحرکت پر سیکیورٹی وجوہات سے مہمان وزیر کو آگاہ کیا، جب کہ امریکا سے سفارت کاروں پر سفری پابندیاں نہ لگانے کا مطالبہ کیا گیا۔

       

اس موقع پر موصول اطلاعات کے مطابق دونوں رہنماؤں کی ملاقات میں ایلس ویلز نے سفارت کاروں پر سفری پابندیاں عائد نہ کرنے کی یقین دہانی سے گریز کیا۔ پاکستان نے امریکی سفارت کار کی گاڑی کی ٹکر سے نوجوان کی ہلاکت کا معاملہ بھی اٹھایا اور امریکی عہدے دار کو بتا دیا کہ اس سلسلے میں ویانا کنونشن اور ملکی قوانین کے تحت کارروائی کی جائے گی۔ تاہم دونوں ممالک نے تناؤ کے خاتمے کیلئے بات چیت جاری رکھنے کے عزم ظاہر کیا۔

 

پس منظر

واضح رہے کہ امریکی سفارت کار کی گاڑی سے جاں بحق ہونے والا تیئس سالہ عتیق کالج کا طالب علم اور نجی ہوٹل میں ویٹر کی حیثیت سے کام کرتا تھا۔ ہفتہ کے روز وہ کام کیلئے اپنے کزن راحیل کے ہمراہ نکلا تھا کہ ایف ایٹ سے مارگلہ روڈ کی طرف اچانک سنگل کراس کرتی امریکی سفارت خانے کی گاڑی کی ٹکر سے شدید زخمی ہوا اور بعد ازاں جاں بحق ہوگیا۔ سفارت خانے کی گاڑی امریکی ملٹری اتاشی مسٹر جوزف چلا رہے تھے۔

پولیس کا ابتدائی بیان

اس سے قبل پولیس کا یہ کہنا تھا کہ بعد اس بات کی تصدیق کرلی گئی ہے کہ امریکی سفارت خانے کی گاڑی ملٹری اتاشی مسٹر جوزف چلا رہے تھے۔ سفارتی استثنیٰ کے باعث امریکی اہلکار کو سفارت خانے واپس جانے کی اجازت دے دی گئی، جب کہ گاڑی تھانہ کوہسار منتقل کی گئی۔

 

پولیس کے مطابق امریکی سفارت کار دامن کوہ جارہے تھے کہ راستے میں حادثہ پیش آگیا۔ امریکی سفارت خانے کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا تھا کہ ملٹری اتاشی کی گاڑی کے حادثے سے آگاہ ہیں، مقامی حکام سے رابطہ ہے، تحقیقات میں مکمل تعاون کررہے ہیں۔ واقعہ پر پولیس کا مزید کہنا تھا کہ تفتیش ہومی سایڈ یونٹ کے حوالے کی گئی ہے، لواحقین کی درخواست پر ڈرائیور کیخلاف کارروائی کی جائے گی، سفارت کار کے پاس لائسنس تھا یا نہیں فی الحال علم نہیں۔

 

 

ایف آئی آر

واقعہ کی ایف آئی آر عتیق کے والد محمد ادریس کی مدعیت میں درج کرلیا گیا۔ عتیق کے والد نے اپنا مؤقف دیتے ہوئے کہا کہ ان کا بیٹا سیکٹر ایف ایٹ کے قریب مارگلہ روڈ سے گزر رہا تھا جب امریکی سفارت کار نے سگنل توڑتے ہوئے اس کی بائیک کو ٹکر ماری۔

         

پاکستانی دفتر خارجہ

دفتر خارجہ کے ترجمان محمد فیصل کا ایک ٹوئٹ میں کہنا تھا کہ وہ اسلام آباد میں ہونے والے حادثے سے آگاہ ہیں اور معاملے کو دیکھ رہے ہیں۔

والد کا بیان

سماء سے گفت گو کرتے ہوئے عتیق کے والد کا کہنا ہے کہ وہ اپنے بیٹے کے لئے انصاف کے طلبگار ہیں۔ دوسری جانب تھانہ کوہسار کے ایس ایچ او کا کہنا ہے کہ بظاہر ایسا لگتا ہے کہ ایکسیڈینٹ میں غلطی امریکی سفارت کار کی تھی۔ سماء نے حادثے کی سی سی ٹی وی فوٹیج حاصل کرلی ہے۔

US EMBASSY

ECL

CHALLAN

islamabad police

kohsar

travel ban

Tehmina Janjua

immunity

ALICE WELLS

man dies

Military Attache

Joseph Emanuel Hall

No-Fly list

Tabool ads will show in this div