خواتین کو ہراساں کرنے والا بیوروکریٹ مستعفیٰ ہوگیا

جاپان میں خواتین کو ہراساں کرنے کے الزامات پر اعلیٰ عہدے پرفائز ایک  بیوروکریٹ نے عہدے سے استعفی دے دیا۔

بی بی سی کے مطابق بعض خواتین جرنلسٹس کا کہنا تھا کہ انہیں جاپان کی فنانس مسٹری میں اعلیٰ عہدے پر تعینات ایک بیورو کریٹ کی جانب سے ہراساں کیا گیا ہے۔

بیورو کریٹ مسٹر فوکودا نےایک میگزین میں شائع ہونے والی رپورٹ میں لگائے گئے الزامات سے انکارکیا ہے جبکہ اس رپورٹ میں ان کے خالف ثبوت موجود ہیں۔ اس حوالے سے ایک آڈیو ٹیپ بھی جاری کی گئی ہے جس میں فوکودا کی مبینہ آواز سنی جا سکتی ہے۔ آڈیو ٹیپ میں وہ خواتین سے نازیبا گفتگو کر رہے ہیں۔

الزامات پر مستعفی ہونے والے فوکودا کا کہنا ہے کہ وہ ان الزامات کا مقابلہ کریں گے اور استعفیٰ صرف اس لیے دے رہے ہیں کہ وہ وزارت کا کام متاثر نہیں کرنا چاہتے جو کہ پہلے سے ہی ایک شدید صورتحال کا سامنا کررہا ہے۔

متعلقہ وزارت کا موقف ہے کہ اس کام کیلئے ایک لافرم سے رابطہ کیا جا رہا ہے جو ان الزامات کی تحقیقات کرے گی۔

ALLEGATIONS

#MeToo

Tabool ads will show in this div