پاک ایران سرحد عبور کرنے کی کوشش میں 2 پاکستانی ہلاک

گوجرانوالہ : ایرانی سرحدی فورسز کی فائرنگ سے 2 پاکستانی ہلاک ہوگئے، گوجرانوالہ سے تعلق رکھنے والے دونوں نوجوان غیر قانونی طور پر پاکستان سے ایران جانے کی کوشش کررہے تھے۔

گوجرانوالہ کے ایک خاندان نے سماء کو بتایا کہ پاک ایران سرحد عبور کرنے کی کوشش کے دوران ایرانی فورسز کی فائرنگ سے 2 نوجوان لخت عباس اور سرفراز ہلاک ہوگئے جبکہ 11 افراد اب بھی لاپتہ ہیں۔

عباس کے والد نے سماء سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ میرا بیٹا 13 مارچ کو گھر سے 50 ہزار روپے لے کر گیا تھا، ٹریول ایجنٹ نے مجھ سے گزشتہ روز رابطہ کرکے مجھ سے بیٹے کی لاش وصول کرنے کا کہا۔

متاثرہ خاندانوں کے مطابق انسانی اسمگلر فیصل کے ساتھ 13 نوجوان ایران جانے کیلئے 13 مارچ کو روانہ ہوئے تھے، جن میں سے اکثریت کا تعلق پنجاب سے تھا۔

سرفراز کے خاندان نے حکومت سے انسانی اسمگلروں کیخلاف کارروائی کا مطالبہ کیا ہے۔

سرفراز کے ایک عزیز کا نے سماء سے بات کرتے ہوئے کہا کہ حکومت انسانی اسمگلرز کیخلاف فوری اقدامات کرتے ہوئے قیمتی جانوں کی حفاظت یقینی بنائے۔

ہزاروں پاکستانی ہر سال اپنی زندگیاں خطرے میں ڈال کر بہتر مواقع کی تلاش میں یورپ کا سفر کرتے ہیں لیکن اکثریت کا انجام جیل یا زندگی کا اختتام ہوتا ہے۔

گزشتہ سال نومبر میں غیر قانونی طور پر پاک ایران سرحد عبور کرنے کی کوشش کے دوران علیحدگی پسندوں کے ہاتھوں تربت میں 20 افراد قتل ہوگئے تھے۔

سپریم کورٹ میں ایف آئی اے کی جانب سے جمع کرائی گئی رپورٹ میں انکشاف ہوا ہے کہ صرف 2017ء میں 6767 افراد غیر قانونی طور پر ایران کے راستے یورپ میں داخل ہوئے تھے، مجموعی طور پر 27 ہزار 749 پاکستانیوں کو ملک بدر کیا گیا، ایران سے 18 ہزار 810، ترکی سے 4 ہزار 401 اور یورپی ممالک سے 4 ہزار 538 افراد ڈی پورٹ ہوئے۔

PUNJAB

illegal

human smuggling

Tabool ads will show in this div