امریکا کاافغانستان میں آئی ای ڈی کی تلاش کیلئے ٹیکنالوجی ایجاد کرنیکا دعویٰ

Nov 30, -0001

اسٹاف رپورٹ

واشنگٹن: افغانستان میں فوجیوں کی ہلاکتوں نے امریکی حکام کو تشویش میں مبتلا کررکھا ہے۔ ان میں سے بیشتر ہلاکتیں سڑک کنارے نصب بموں سے ہورہی ہیں۔ 

امریکی سائنسدانوں نے ایک ایسی لیزر ٹیکنالوجی ایجاد کرنے کا دعویٰ کیا ہے جس سے سڑک کنارے نصب بموں کو تلاش کیا جاسکے گا۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ یہ لیزر دور سے آتش گیر مادے یعنی 'امپرو وائزڈ ایکسپلوسو ڈیوائس کا پتا لگا سکتی ہے۔ مِشی گن اسٹیٹ یونیورسٹی  میں کی جانے والی تحقیق کے مطابق ماحول میں کچھ ایسے کیمیائی عناصر موجود ہیں جن کی وجہ سے امپرو وائزڈ ایکسپلوسو ڈیوائس کا پتا لگانا ہمیشہ سے مشکل تھا۔

اب ماہرین کا کہنا ہے کہ ہر مالیکیول کی ایک انفرادی فریکوئنسی ہوتی ہے جس کی  بِنا پر یہ لیزر مالیکیول کو حرکت دے کر بم وغیرہ کی شناخت کر سکتی ہے۔ یہ لیزر شعاع ایک مخصوص فاصلے سے کسی بھی چیز کی کیمیائی بناوٹ کا معائنہ کر سکتی ہے۔

سائنسدانوں کے مطابق اس ایجاد کو تشکیل دینے میں جو طریقہ  اپنایا گیا  ہے وہ بنیادی طور پر خوردبین کے لیے استعمال ہوا۔

واضح رہے کہ ماہ اگست میں  افغانستان میں تعینات 66 امریکی فوجی ہلاک ہوئے۔ اس سے قبل جولائی 2010ءمیں 65 امریکی فوجی ہلاک ہوئے تھے۔ رواں سال کے دوران افغانستان میں تعینات 403 غیر ملکی فوجی ہلاک ہوچکے ہیں  جن میں 299 امریکی تھے۔ سماء / ایجنسیز

میں

کی

آئی

ڈی

jirga

decision

shoe

ای

Tabool ads will show in this div