متاثرین سیلاب کی مشکلات پر بند نہ بند سکا،لاکھوں بے گھر امداد کے منتظر

Nov 30, -0001

اسٹاف رپورٹ

کراچی: اندرون سندھ متاثرین سیلاب کی تاحال پریشانیوں میں گھرے ہیں اوران کی مشکلات کے سیلاب کے سامنے بند نہیں باندھا جاسکا ہے۔ بے گھرافراد کی تعداد لاکھوں میں ہے۔ یہ ہی وجہ ہے کہ امدادی سرگرمیوں کے باوجود بیشتر متاثرین رُل رہے ہیں۔

ن لیگ کے سربراہ نواز شریف بھی متاثرہ علاقوں کا دورہ کر رہے ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ حکومت نے متاثرین سیلاب کی مدد نہیں کی لیکن پنجاب سے امداد آرہی ہے۔



سانگھڑ میں المنصورہ کالونی، ہاؤسنگ سوسائٹی،ماڈل ٹاؤن، شیشم کوٹ، پولیس لائنز اور ایم اے جناح روڈ کئی کئی فٹ پانی میں ڈوبے ہیں۔ ضلعی انتطامیہ کی جانب سے بارش کے پانی کی نکاسی کے لیے خاطر خواہ بندوبست نہیں کیا گیا۔ تعفن اٹھنے سے وبائی امراض بھی پھیل رہے ہیں۔

متاثرین کی مشکلات کا جائزہ لینے اور مدد کے لیے مسلم لیگ نون کے سربراہ سندھ کے مختلف علاقوں کے دورے پر ہیں۔ سانگھڑ کے گاؤں جام نواز علی میں متاثرین کی بہت بڑی تعداد سے خطاب کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ قدرتی آفات کو روکا نہیں جا سکتا۔انہوں نے کہا کہ بہتر اقدامات سے متاثرین کی مشکلات کم کی جا سکتی ہیں۔ مشکل گھڑی میں وہ عوام کو تنہا نہیں چھوڑیں گے۔


 دریائے سندھ میں پانی کی سطح بلند ہونے سے ٹھٹھہ کے قریب کچے کے علاقے میں مزید کئی دیہات زیرآب آ گئے اور نقل مکانی کا سلسلہ جاری ہے۔

متاثرین نے پل کے قریب کھلے آسمان تلے پناہ لے رکھی ہے اور وہ امداد نہ ملنے کی وجہ شدید مشکلات کا شکار ہیں۔
 
 بدین میں بھی صورتحال ابتر ہے۔ بارشوں کے کئی دن بعد بھی سڑکوں پر پانی جمع ہے۔ شہریوں کو آمدورفت میں شدید مشکلات کا سامنا ہے اور وہ اپنی مدد آپ کے تحت پانی کے سامنے بند باندھ رہے ہیں۔ سماء

کی

کے

پر

tsunami

9/11

Narendra Modi

defeat

offers

palestinian

Tabool ads will show in this div