شمالی کوریا کے رہنما کم جونگ ایل 69سال کی عمر میں چل بسے

Nov 30, -0001

اسٹاف رپورٹ


پیونگ یونگ : شمالی کوریا کے رہنما کم جونگ ٹو علالت کے بعد انہتر سال کی عمر میں انتقال کرگئے۔


شمالی کوریا کے سپریم لیڈر کم جونگ ال سولہ فروری انیس سو بیالیس کو پیدا ہوئے۔


انہوں نے دوارن تعلیم سیاست میں دلچسپی لینا شروع کی ۔ انیس سو ستر میں یونی ورسٹی آف مالٹا سے انگریزی کی تعلیم بھی حاصل کی۔

انیس سو اسی کی دہائی میں وہ حکمراں جماعت کے اہم عہدوں پر بھی فائز رہے۔


انہوں نے نیشنل ڈیفنس کمیشن کے چئیرمین کی حیثیت سے بھی ذمہ داریاں نبھائیں۔ اس دوران انہیں ملک کے عزیز حکمراں اور فوج کے سپریم لیڈر کا خطاب دیا گیا۔

کم جونگ ال انیس سو چورانوے میں اپنے والد کم ال سونگ کے انتقال کے بعد برسراقتدار آئے۔


ان کی سرابراہی کے دوران انیس سو چوارنوے میں امریکا اور شمالی کوریا کے درمیان ایٹمی معاہدہ طے پایا .


جس کے تحت امریکا نے شمالی کوریا کو ایٹمی ہتھیاروں کے حصول کی کوششیں ترک کرنے کے بدلے دو ایٹمی بجلی گھروں کی تعمیر کے لیے سرمایہ فراہم کرنے کی پیش کش کی۔ 

2002 میں شمالی کوریا کی حکومت نے خفیہ طور پر جوہری ہتھیاروں کی تیاری کا اعتراف کیا اور نو  اکتوبر دو ہزار چھ کو شمالی کوریا کے سرکاری میڈیا پر ایٹمی تجربے کا اعلان کیا گیا۔

دوہزار آٹھ میں کم جونگ ال پر فالج کا حملہ ہوا جس کے بعد وہ  کئی ماہ تک منظر عام پر نہیں آئے اور انکی صحت اور انتقال کی خبریں عالمی میڈیا پر گردش کرنے لگیں۔


علالت کے باوجود انہوں نے  دوہزار دس اور گیارہ میں چین کا دورہ کیا۔ کم جونگ ال کے بعد ان کے بیٹے کم جونگ آن کو ان کا جانشین مقرر کیا گیا ہے۔ 

کم جونگ آن کی عمر تیس سال ہے۔ وہ فور اسٹار جنرل ہیں اور ان کے پاس کمیونسٹ پارٹی کے فوجی کمیشن کے نائب چیئرمین کا عہدہ بھی ہے۔ سماء/ایجنسیز


وڈیو دیکھنے کیلئے نیچے دیئے گئے ویڈیو کے لنک پر کلک کریں

میں

کی

کے

dialogues

risk

conditions

arabs

director

Tabool ads will show in this div