فرحت اللہ بابر کی سینیٹ اجلاس میں آئینی ادارے پر تنقید

اسلام آباد: آصف علي زرداري کے ترجمان فرحت اللہ بابر نے سينيٹ ميں پھٹ پڑے بولے افسوس ہے پيپلز پارٹي نے بھي پارليمنٹ کي آزادي پر سمجھوتا کرليا، ججز اپنا وقار بڑھانے کے ليے توہين عدالت قانون کا سہارا ليتے ہيں۔

سينيٹ اجلاس ميں پیپلزپارٹی کے رہنما فرحت اللہ بابر کا کہنا تھا کہ اٹھارويں ترميم ختم کي گئي، تو چھوٹے صوبے مشرقي پاکستان کا سا سلوک برداشت نہيں کريں گے، ججز فیصلے میں قانون کے بجائے شعر لکھ دیتے ہیں خدشہ ہے کہيں دوہزار اٹھارہ عدلیہ پر ریفرنڈم ثابت نہ ہو۔

ان کا کہنا تھا کہ افسوس ہے میری جماعت نے بھی پارلیمان کی آزادی پر سمجھوتہ کر لیا، سب کے احتساب کي بات آئي توميري جماعت بھي پيچھے ہٹ گئي، پارلیمنٹ نے ڈی فیکٹو ریاست ختم نہ کی تو ٹکراؤ ہوگا۔

انہوں نے کہا کہ 18 ویں ترمیم پر قدغن لگائی جا رہی ہے،خبردار ايسا نہ کرنا، ڈرو اس دن سے جب چھوٹے صوبے برابری کے حقوق مانگیں، پاکستان کوخطرات سے بچانے کی ذمے داری پارلیمان پر ہے۔ سماء

 

JUDICIARY

SENATE

ASIF ALI ZARDARI

FARHAT ULLAH BABAR

2018 elections

Senator Farhatullah Babar

Tabool ads will show in this div