سینیٹ الیکشن،جنرل سیٹ پر نامزد واحد خاتون کون؟؟

Pakistan
Pakistan

اسلام آباد : سینیٹ الیکشن 2018 میں جنرل سینٹ پر نامزد ہونے والی واحد خاتون کنول شوذب ہیں، جنہں پی ٹی آئی کے ٹکٹ پر نامزد کیا گیا ہے، جب کہ دیگر جماعتوں کی جانب سے صرف مردوں کو ہی جنرل نشستوں کیلئے نامزد کیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق سیاسی جماعتوں نے جنرل نشستوں کیلئے صرف مرد امیدواروں کو ٹکٹ دیئے ہیں، سوائے ایک خاتون امیدوار کنول شوذب، جن کا تعلق پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) سے ہے۔ سینیٹ الیکشن کیلئے کنول شوذب پی ٹی آئی کے ٹکٹ پر جنرل نشست پر سینیٹ الیکشن لڑیں گی۔

 

امیداوار 36 سالہ کنول کا تعلق جنوبی پنجاب سے ہے اور انہیں پی ٹی آئی چیئرمین عمران خان نے اسلام آباد کی جنرل نشست سے امیدوار نامزد کیا ہے۔ 1997 میں کنول شوذبب صرف 15 سال کی عمر میں پی ٹی آئی کی رکن بنیں اور آج وہ شمالی پنجاب میں خواتین ونگ کی صدر ہیں۔

 

کنول نے پولیٹیکل سائنس میں ایم فل کیا ہے اور انہیں اس تعلیمی پس منظر اور خواتین کے لیے کام کرنے پر ٹکٹ کا حقدار سمجھا گیا۔ یہاں یہ بات بھی قابل ذکر ہے کہ اسلام آباد سے سینیٹ کی جنرل نشست کے لیے قومی اسمبلی کے ارکان ووٹ کاسٹ کرتے ہیں، جس میں مسلم لیگ (ن) کی اکثریت ہے اور کنول کا سیٹ جیت جانا مشکل ہے۔

 

پنجاب کی 7 جنرل نشستوں پر 10 امیدوار مد مقابل ہونگے۔ ن لیگی کی جانب سے آصف کرمانی، رانا محمود الحسن، شاہین خالد بٹ ، زبیرگل ، ہارون اختر ، رانا مقبول اور مصدق ملک کو سینیٹ الیکشن کی جنرل نشستوں کیلئے نامزد کیا گیا ہے۔

 

پیپلزپارٹی کے شہزاد علی ، پی ٹی آئی کے چودھری سرور، مسلم لیگ ق کے کامل علی آغا بھی مدمقابل ہونگے۔ ٹیکنو کریٹ کی 2 نشستوں پر 4 امیدواروں کے درمیان مقابلہ ہو گا۔ اسحاق ڈار اور حافظ عبد الکریم کو مسلم لیگ ن کی حمایت حاصل ہو گی جبکہ پی ٹی آئی کے ملک آصف جاوید اور پیپلزپارٹی کے نوازش علی خان میدان میں اتریں گے۔

واضح رہے کہ اس سے قبل سال 2015 میں سینیٹ کی 50 فیصد نشستوں پر ہونے والے انتخابات میں صرف دو خواتین کو ہی جنرل نشست پر منتخب کیا گیا، خوشبخت شجاعت، جن کا تعلق ایم کیو ایم سے ہے اور شیری رحمان جن کا تعلق پاکستان پیپلز پارٹی (پی پی پی)سے ہے۔ سماء

 

PTI

elections 2018

Khushbakht Shujaat

general seats

senate elections

kanwal Shauzab

#SenateElections2018

Tabool ads will show in this div