متحدہ قومی موومنٹ کا الٹی میٹم ختم، کارکنان کی بازیابی کیلئے ملک گیر مظاہروں کا فیصلہ

Nov 30, -0001

اسٹاف رپورٹ


کراچی : متحدہ قومی موومنٹ کا کارکنان کی بازیابی کیلئے حکومت کو دیا گیا الٹی میٹم ختم ہوگیا، ایم کیو ایم نے ملک گیر مظاہروں کا فیصلہ کرلیا، کل سینیٹ اجلاس سے احتجاج کا آغاز کیا جائے گا، قائد الطاف حسین نے صدر، وزيراعظم اور آرمی چيف سے مطالبہ کيا ہے کہ لاپتہ کارکنوں کو بازياب کرايا جائے، چيف جسٹس معاملے پر ازخود نوٹس ليں، وفاقی حکومت نے متحدہ کی اعلٰی قيادت کو تحفظات دور کرنے کی يقين دہانی کرائی ہے۔


ایم کیو ایم کی جانب سے لاپتہ کارکنوں کی بازیابی کیلئے حکومت کو دیا گیا 24 گھنٹے کا الٹی میٹم ختم ہوگیا، متحدہ نے ملک گیر مظاہروں کا فیصلہ کرتے ہوئے کل پہلے مرحلے میں سینیٹ سے احتجاج کے آغاز کا اعلان کردیا۔


ایم کیو ایم کا کہنا ہے کہ لاپتہ کارکنوں کی بازیابی کی خاطر احتجاج کیلئے تمام آئینی راستے اختیار کئے جائیں گے۔


ذرائع کے مطابق متحدہ قومی موومنٹ کا ایک وفد کل وزیر داخلہ چوہدری نثار علی خان سے اہم ملاقات کرے گا جس میں کارکنوں کے ماورائے عدالت قتل، گرفتاریوں، تشدد اور لاپتہ افراد سے متعلق بات چیت کی جائے گی۔


ایم کیوایم کے قائد الطاف حسین نے صدر، وزیراعظم، آرمی چيف اور ڈی جی آئی ایس آئی سميت ديگر اعلیٰ حکام سے لاپتہ پارٹی کارکنوں کی فوری بازیابی کا مطالبہ کيا ہے، انہوں نے چیف جسٹس سپریم کورٹ سے معاملے پر ازخود نوٹس لينے کی اپیل کی۔


الطاف حسين کا کہنا ہے ايم کيو ايم کے 45 کارکن لاپتہ ہیں، پولیس، رینجرز اور سرکاری ایجنسیاں ان کے بارے ميں کچھ نہيں بتا رہيں، دوران حراست ان پر تشدد بھی کيا جارہا ہے۔


ادھر پارٹی کارکن سلمان کے اغواء اور قتل سے متعلق متحدہ کی درخواست سندھ ہائی کورٹ نے سماعت کیلئے منظور کرلی، عدالت نے ڈی جی رینجرز، آئی جی سندھ، اے آئی جی کراچی، ایس ایس پی ایسٹ اور دیگر سے 19 فروری کو جواب مانگ ليا، درخواست ميں ایڈیشنل آئی جی شاہد حیات سمیت دیگر افسران کو بھی نامزد کرنے کی استدعا کی گئی ہے۔


 دوسری جانب وفاقی وزیر داخلہ چوہدری نثار اور اسحاق ڈار نے گورنر سندھ سے ٹیلی فونک رابطہ کیا اور ایم کیو ایم کی اعلٰی قیادت کو ایک بار پھر یقین دہانی کرائی کہ متحدہ کے تحفظات دور کی جائیں گی، وفاقی حکومت نے وزیراعلیٰ سندھ کو بھی ہدایت کی ہے کہ ایم کیو ایم کے لاپتہ کارکنوں کی بازیابی کیلئے اقدامات کئے جائیں۔ سماء

کی

کا

ملک

فیصلہ

reporter

hails

Tabool ads will show in this div