لاہور کا سیشن کورٹ گولیوں کی گھن گرج سے گونج اٹھا

[video width="640" height="360" mp4="https://i.samaa.tv/wp-content/uploads/sites/11//usr/nfs/sestore3/samaa/vodstore/urdu-digital-library/2018/02/LHR-FIRING-EX-20-02.mp4"][/video]

لاہور : لاہور کے سیشن کورٹ میں دو کلاء کے گروپ کی لڑائی نے ایک بار پھر سیشن کورٹ کے احاطے کو اکھاڑے میں تبدیل کردیا، گالم گلوچ سے شروع ہونے والی لرائی ہاتھا پائی اور بعد ازاں فائرنگ تک جا پہنچی، جس سے دو وکیل ہلاک ہوگئے۔

تفصیلات کے مطابق لاہور کے سیشن کورٹ میں ایک ماہ میں فائرنگ کا دوسرا واقعہ رونما ہوگیا۔ وکلاء کے دو گروپوں کی لڑائی میں بندوق نکل پڑی اور گولیاں چل پڑیں، جس سے دو وکیل موقع پر ہی ہلاک ہوگئے۔

پولیس کے مطابق فائرنگ کا واقعہ دو وکلاء گروپوں کی آپس کی لڑائی کے باعث پیش آیا۔ فائرنگ سے رانا ندیم موقع پر ہلاک، جب کہ اویس طالب نے اسپتال میں دم توڑ دیا۔

پولیس نے فائرنگ کرنے والے ملزم کاشف کو اسلحہ سمیت گرفتار کرلیا۔ فائرنگ کے بعد عدالتی احاطی میں کھلبلی مچ گئی اور سائلین بھگدڑ کے باعث لوگ ادھر ادھر بھاگنے لگے، بعد ازاں سیشن کورٹ کے داخلی دروازوں کو بند کردیا گیا۔

 

عینی شاہدین کے مطابق وکلاء پر فائرنگ کرنے والا بھی وکیل نکلا ہے، کاشف راجپوت ایڈووکیٹ نے مقدمے کی سماعت کے بعد کمرہ عدالت سے باہر آکر مخالفین پر گولیاں برسا دیں۔

عینی شاہدین کا کہنا ہے کہ ملزم اور جاں بحق وکیل ندیم کزن تھے۔ ان کے درمیان پراپرٹی کے تنازعے پر فائرنگ ہوئی۔ ڈی آئی جی آپریشنز نے واقعہ کی رپورٹ 2 گھنٹے میں طلب کرلی، واقعہ پر سیشن جج عابد حسین قریشی نے نوٹس لیتے ہوئے پولیس اور سیکیورٹی اداروں سے استفسار کرتے ہوئے پوچھا کہ سیکیورٹی کے باوجود اسلحہ اندر کیسے آیا ؟؟

   

واضح رہے کہ ایک ماہ میں لاہور سیشن کورٹ میں یہ فائرنگ کا دوسرا بڑا واقعہ ہے۔ اس سے قبل فائرنگ کے واقعہ میں دو پولیس اہل کار سمیت ۴ افراد ہلاک ہوئے تھے۔ سماء

JUDICIARY

PUNJAB

Lahore Firing

firings

ession court

lawyers killed

Tabool ads will show in this div