یورپی یونین نے پھر پاکستان پر سزائے موت پر پابندی کا مطالبہ کردیا

ویب ایڈیٹر:


برسلز : یورپی یونین نے پاکستان میں پھانسیوں کی سزا پر عمل درآمد پر  ایک بار پھر شدید تحفظات کا اظہار کردیا۔

پاکستان میں یورپی یونین کے سفیر لارس گنار وگیمارک کی جانب سے جاری ہونے والے ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ دہشت گردی کے خلاف جنگ میں سزائے موت موثر ہتھیار نہیں, سفیر کا کہنا تھا کہ یورپی یونین کو حکومت پاکستان کی جانب سے سزائے موت پر پابندی اٹھانے کے فیصلے سے مایوسی ہوئی ہے,  انھوں نے پابندی کو جلد از جلد دوبارہ عائد کرنے کی امید کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ یورپی یونین کسی بھی طرح کی صورتحال میں سزائے موت کے خلاف ہے۔

تاہم یورپی یونین کے سفیر کا یہ بھی کہنا تھا کہ دکھ کی اس گھڑی میں پاکستان کے ساتھ ہیں، تاہم پھانسیوں کے فیصلے پرعمل درآمد پر شدید تحفظات ہیں۔
واضح رہے کہ 16 دسمبر کو پشاور کے آرمی پبلک اسکول پر کالعدم تحریک طالبان پاکستان  کے وحشیانہ حملے  میں اب تک 134 بچوں سمیت146 افراد  شہید ہو چکے ہیں، جس کے بعد  17 دسمبر کو وزیراعظم نواز شریف نے دہشت گردی کے مقدمات میں قید مجرموں کی سزائے موت پر پابندی ختم کرنے کا اعلان کیا ۔ سماء

کا

پر

rizvi

نے

azerbaijan

Tabool ads will show in this div