قصورواقعہ سپریم کورٹ تک پہنچ گیا،چیف جسٹس دکھی ہوگئے

Jan 11, 2018
[video width="640" height="360" mp4="https://i.samaa.tv/wp-content/uploads/sites/11//usr/nfs/sestore3/samaa/vodstore/urdu-digital-library/2018/01/SC-Remarks-Zainab-Isb-Pkg-11-01.mp4"][/video]

اسلام آباد: معصوم زینب کے اندوہناک قتل پر چیف جسٹس بھی دکھی ہيں۔انھوں نے کہاکہ اس واقعہ پر پوری قوم کا سر شرم سے جھک گیا ہے۔ دکھ اور سوگ اپنی جگہ لیکن ہڑتال کی گنجائش نہیں بنتی۔

سانحہ قصور کا سپریم کورٹ میں تذکرہ ہوا۔الراضی میڈیکل کالج کے الحاق سے متعلق کیس کی سماعت کے دوران چیف جسٹس نے استفسار کیا تواعتزاز احسن نے بتایا کہ سانحہ قصور کے خلاف ہڑتال جا رہی ہے۔

چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ زینب قوم کی بیٹی تھی۔واقعہ پر پوری قوم کا سر شرم سے جھک گیا ہے۔ان سے زیادہ ان کی اہلیہ گھر میں پریشان بیٹھی ہے ۔دکھ اور اور سوگ اپنی جگہ لیکن ہڑتال کی گنجائش نہیں بنتی۔

اعتزاز احسن نے موقف اختیار کیا کہ عدلیہ تحریک کے منفی پہلو بھی سامنے آئے ہیں۔ پرتشدد وکلاء اور مغرور ججز عدلیہ تحریک کا نتیجہ ہیں۔

چیف جسٹس نے واضح کیا کہ ججز کو کسی صورت مغرور نہیں ہوناچاہیے۔دعا کریں غرور ہمارے لیے موت کا باعث بنے۔انھوں نے ریمارکس دیئے کہ اعتزاز احسن نہ ہوتے تو وکلاء تحریک نہ چلتی۔انہیں بطور قانون ساز اب وہی کردار ادا کرنا ہو گا۔

عدالت نے خیبر میڈیکل یونیورسٹی کو داخلہ ٹیسٹ کے نتائج جاری کرنے کی اجازت دیتے ہوئے سماعت 16 جنوری تک ملتوی کر دی ۔ سماء

JusticeForZainab

ZainabkoInsaafdo

Tabool ads will show in this div