ننھی7 سالہ زینب کازیادتی کے بعد قتل،شہر سراپا احتجاج

Jan 10, 2018

[video width="640" height="360" mp4="https://i.samaa.tv/wp-content/uploads/sites/11//usr/nfs/sestore3/samaa/vodstore/urdu-digital-library/2018/01/QASOOR-PROTEST-BPR-10-01.mp4"][/video]

قصور : پانچ روز قبل روڈ کوٹ قصور سے اغواء ہونے والی سات سالہ معصوم بچی کو درندہ صفت انسان نے اپنی وحشت کا نشانہ بنا کر قتل کرکے لاش شہباز خاں روڈ ویرانے میں پھینک دی تھی، واقعہ کے خلاف قصور سمیت مختلف شہروں میں احتجاج جاری ہے، جب کہ تاجروں اور وکلاء کی جانب سے بھی ہڑتال کی جا رہی ہے۔

تفصیلات کے مطابق چھ روز قبل اغوا ہونے والی قصور کی رہائشی سات سالہ زینب کو ڈیوشن سے واپسی پر اغوا کیا گیا تھا، اغوا کے بعد ننھی بچی کو کئی بار زیادتی کا نشانہ بنایا گیا، جس کے بعد اپنا گناہ اور جرم چھپانے کیلئے سفاک درندہ ملزم نے اسے گلا دبا کر قتل کردیا۔ چھ روز بعد ننھی زینب کی لاش کچرا کنڈی کے پاس شاپر سے ملی، جس پر پولیس کو اطلاع دی گئی۔

لاس کی اطلاع لوگوں تک ملتے ہی پورا شہر اور پولیس موقع پر پہنچ گئی۔ شہریوں کا یہ دلخراش واقعہ پر جذبات کنٹرول کرنا مشکل ہوگیا۔ عوام نے فیروز پور روڈ بائی پاس اور دیگر راستوں کو ٹریفک کے لیے بند کرکے ٹائر جلا کر احتجاج کرتے رہے۔

ڈی پی او قصور نے کہا کہ یہ میری اپنی بچی ہے واقعہ میں ملوث ملزم کو جلد نشان عبرت بنا دیا جائے گا۔ پوسٹ مارٹم رپورٹ میں بچی سے کئی بار زیادتی کی تصدیق کی گئی ہے۔ رپورٹ میں اس بات کی بھی تصدیق کی گئی ہے کہ بچی کو گلا دبا کر قتل کیا گیا۔

واقعہ کے بعد شدید احتجاج کرتے ہوئے تاجر برداری نے قصور کی مارکیٹیں، دکانیں اور دیگر تمام کاروباری ادارے بند کر دئیے۔ عوام کی جانب سے شہر کے مختلف چوکوں میں ٹائروں کو آگ لگا کر سڑکوں کو ٹریفک کے لیے بند کرکے احتجاج جاری رہا۔ مظاہرین جلوسوں کی صورت میں فیروز پور روڈ بائی پاس پر جا کر مین سڑک کو ٹریفک کے لیے بند کردیا گیا۔ مظاہرین کا مطالبہ ہے کہ اصل ملزمان کی گرفتاری تک احتجاج جاری رہے گا۔

دوسری جانب وکلاء کی جانب سے بچوں کے ساتھ زیادتی کے بڑھتے واقعات پر مکمل ہڑتال اور احتجاج کی کال پر عدالتوں کا بائیکاٹ جاری ہے۔

واضح رہے کہ چھ روز قبل سات سالہ معصوم زینب قرآن پاک پڑھنے کے لیے گھر سے گئی اور واپس نہ آئی تو گھر والوں نے بچی کی تلاشی شروع کر دی، جب کہ معصوم زینب کے والدین عمرہ کی ادائیگی کیلئے مکہ معظمہ گئے ہوئے تھے بچی نہ ملنے پر گھر والے سخت پریشان تھے۔

ڈی پی او قصور ذوالفقار احمد نے مغویہ بچی کی بازیابی کے لیے پولیس افسران پر مشتمل مختلف ٹیمیں تشکیل دے رکھی تھیں، تاہم گزشتہ روز شہباز خاں روڈ پر واقعہ اڈہ کے بیک سائیڈ پر ایک گندگی کے ڈھیر سے معصوم زینب کی لاش ملی۔ سماء

PUNJAB

CHILD

MINOR GIRL

ABUSE

JusticeForZainab

Tabool ads will show in this div