امریکا اب الزام تراشیاں کررہا ہے، وزیر دفاع پھٹ پڑے

اسلام آباد : وزير دفاع خرم دستگير کہتے ہيں امريکا اور پاکستان کے درميان تمام پردے ہٹ چکے، دفاعی اور انٹیلی جنس تعاون معطل کردیا، زمینی اور فضائی سہولتیں کب بند کرنی ہیں اس کا فیصلہ فوج کے مشورے سے وقت پر کریں گے۔ انہوں نے واضح کیا کہ  افغان جنگ پاکستان کی سرزمین پر لڑنے کی اجازت نہیں دی جائے گی۔

اسلام آباد میں ایک تقریب سے دھواں دھار خطاب میں وزیر دفاع خرم دستگیر خان کا کہنا تھا کہ 2 مئی کے واقعے سے تعلقات میں دراڑیں آئیں، امریکا سے دفاعی اور انٹیلی جنس تعاون معطل کر دیا ہے،  زمینی اور فضائی سہولتیں دے رہے ہیں، اس تعاون کو معطل کرنے کا فیصلہ فوج کے مشورے سے وقت پر کیا جائیگا۔

ان کا کہنا ہے کہ ایران اور روس کیساتھ امریکا کے تنازعات ہیں، امریکا کیلئے واحد آپشن پاکستان ہی بچتا ہے، بھارت کی کولڈ اسٹارٹ ڈاکٹرائن وار جاری ہے، افغان جنگ پاکستان میں نہیں لڑنے دیں گے، افغان حکومت کا اپنے ملک میں 43 فیصد علاقے پر کنٹرول ہے، امریکا نے باڑھ لگانے میں مدد نہیں کی۔ سماء

USA

DEFENSE MINISTER

Khurram Dastagir

War on Terror

US policy

Tabool ads will show in this div