Tuesday, May 17, 2022  | 1443  شوّال  15

ہیٹ ویو کے بعدہیلتھ الرٹ بھی جاری، عوام کیااحتیاط کریں؟

SAMAA | - Posted: May 12, 2022 | Last Updated: 5 days ago
SAMAA |
Posted: May 12, 2022 | Last Updated: 5 days ago

محکمہ موسمیات کے ہیٹ ویو الرٹ کے پیش نظر پاکستان میڈیکل ایسوسی ایشن نے ہیلتھ الرٹ جاری کردیا۔ پی ایم اے نے حکومت پر زور دیا ہے کہ اس بات کو یقینی بنایا جائے کہ گرمی کے دنوں میں لوڈ شیڈنگ نہ ہو۔

پاکستان میڈیکل ایسوسی ایشن (پی ایم اے) کی جانب سے ہیلتھ الرٹ جاری کیا گیا ہے، جس میں پی ایم اے کے سیکریٹری ڈاکٹر قیصر سجاد نے کہا ہے کہ محکمہ موسمیات کی پیشگوئی کے مطابق 16 مئی تک سندھ کے شہریوں کو شدید گرمی کی لہر کا سامنا رہے گا، اس شدید گرمی کی لہر کے دوران کراچی کا زیادہ سے زیادہ درجہ حرارت 40 ڈگری سینٹی گریڈ تک بڑھ سکتا ہے، جبکہ دیگر شہروں میں دادو، سکھر، لاڑکانہ، جیکب آباد، شہید بے نظیر آباد، نوشہرو فیروز، خیرپور، شکارپور اور گھوٹکی کے اضلاع میں درجہ حرارت 46 سے 48 ڈگری سینٹی گریڈ تک بڑھنے کا خدشہ ہے۔

ڈاکٹر قیصر سجاد کا کہنا تھا کہ شدید گرم موسمی حالات میں شہریوں کو چاہئے کہ وہ خود کو گرمی کی لہر سے بچانے کیلئے احتیاطی تدابیر اختیار کریں، شہریوں کو چاہئے کہ وہ صبح 11 سے شام 4 بجے تک گھر سے غیر ضروری طور پر باہر نہ نکلیں، اگر گھر سے باہر جانا ضروری ہو تو کوشش کریں کہ سایہ دار راستہ اختیار کریں، سر ڈھانپ کر نکلیں اور دھوپ والے مقام پر زیادہ دیر نہ ٹھہریں۔

انہوں نے مزید کہا کہ اگر دھوپ میں گھر سے باہر نکلنا پڑے تو ایسے میں سر پر ٹوپی پہنیں، گیلا رومال یا کپڑا رکھیں، ننگے پاؤں باہر نہ نکلیں، دن کے اوقات میں کھلے آسمان تلے کھیل کود سے گریز کریں، ہلکے اور نرم کپڑے پہنیں، سیاہ یا گہرے رنگ کے کپڑوں کا استعمال ہرگز نہ کریں۔

ڈاکٹر قیصر سجاد نے مزید بتایا کہ بچے اور بزرگ شہری خاص طور پر گرمی میں احتیاط کریں، ان کی قوت مدافعت کم ہوتی ہے اس لئے انہیں گرمی سے زیادہ خطرات لاحق ہوتے ہیں، گرم موسم میں ہمیشہ گھر کا تازہ بنا ہوا کھانا کھائیں، سبزیاں، دالیں، پھل، دہی اور دودھ کا استعمال زیادہ کریں، گرم موسم میں گھر سے باہر نکلیں تو گھر کے بنے مشروبات اور پانی کی بوتل ساتھ لے کر نکلیں، ایک دن میں 15 سے 20 گلاس پانی یا مشروب پئیں۔

ان کا کہنا تھا کہ اس وقت سندھ میں ہیضہ اور ڈائریا پھیلا ہوا ہے، ایسے میں پانی اُبال کر پیا جائے، کھانا بناتے ہوئے اور کھانے سے پہلے ہاتھ ضرور دھوئیں، واش روم استعمال کرنے کے بعد بھی ہاتھوں کو صابن سے لازمی دھوئیں۔

ڈاکٹر قیصر سجاد کا یہ بھی کہنا تھا کہ حکومت کو چاہئے کہ وہ بجلی فراہم کرنے والی کمپنیوں کو پابند کریں کہ اس موسم میں لوڈشیڈنگ نہ کی جائے اور پانی کی فراہمی میں کوئی تعطل پیدا نہ ہو۔

انہوں نے شہریوں پر زور دیا کہ پانی کی بچت کریں، اسے گاڑیاں دھونے اور باغ بانی میں ضائع نہ کریں تاکہ شدید گرمی کے دوران پانی کا ذخیرہ برقرار رہے، سرکاری اور غیر سرکاری تنظیموں کو چاہئے کہ وہ گرمی کی اس لہر کے دوران مختلف عوامی مقامات، سڑک کنارے اور بس اسٹاپس پر ٹھنڈے پانی کے کولر کا انتظام کریں اور فرسٹ ایڈ کے اسٹال لگائیں۔

ہیٹ اسٹروک کی صورت میں کیا کیا جائے؟

اگر کوئی شخص ہیٹ اسٹروک کا شکار ہوجائے تو اس میں یہ علامات ظاہر ہوں گی۔ بے چینی، غنودگی، کمزوری، چڑچڑاپن، بلڈ پریشر کم ہونا، نبض تیز چلنا، چکر آنا، اُلٹی ہونا، حواس میں کمی، پٹھوں میں درد ہونا۔

اگر کسی شخص میں یہ علامات ظاہر ہوں تو اسے سایہ دار جگہ پر لٹائیں اور ٹانگیں اوپر کی طرف رکھیں، سانس لینے کے عمل کو یقینی بنائیں، اسے صاف پانی پلائیں، اگر بے ہوشی کی کیفیت ہو تو پانی پلانے اور کھانے کی اشیاء منہ میں ڈالنے سے گریز کریں۔

متاثرہ شخص کے جسم پر برف یا ٹھنڈے پانی کی پٹیاں رکھیں، نبض اور خون کا دورانیہ چیک کریں اور مریض کو فوری طور پر قریبی اسپتال لے جائیں۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube