Wednesday, May 18, 2022  | 1443  شوّال  17

پاکستان میں کرونا وائرس کا پہلا مریض صحتیاب ہوگیا

SAMAA | - Posted: Mar 6, 2020 | Last Updated: 2 years ago
SAMAA |
Posted: Mar 6, 2020 | Last Updated: 2 years ago

پاکستان میں کرونا وائرس کا پہلا مریض صحتیاب ہوکر اسپتال سے خارج ہوگیا ہے۔ بائیس سالہ نوجوان میں ایران سے واپسی پر کراچی میں وائرس کی تصدیق ہوگئی تھی۔

سندھ حکومت کے ترجمان مرتضیٰ وہاب نے کہا ہے کہ جمعہ کو مریض کے ٹیسٹ کا نتیجہ منفی آگیا ہے۔

جمعہ کو وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ کی زیر صدارت کرونا وائرس کے ٹاسک فورس کا اجلاس ہوا جس میں وزیر صحت، چیف سیکریٹری اور سیکریٹری صحت سمیت دیگر حکام نے شرکت کی۔

سیکریٹری صحت نے وزیراعلیٰ سندھ کو بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ کراچی میں کرونا وائرس کا سب سے پہلا شکار ہونے والا نوجوان صحتیاب ہوگیا ہے۔ جس پر وزیراعلیٰ سندھ نے نوجوان اور ان کے اہل خانہ سمیت ڈاکٹروں اور محکم صحت کے حکام کو مبارک باد دی۔

سندھ کے محکمہ صحت کی جانب سے میڈیا کو الگ سے بیان بھی جاری کیا گیا ہے جس کے مطابق کرونا وائرس کا پہلا مریض مکمل طور پر صحتیاب ہوگیا ہے اور اسپتال انتظامیہ نے انہیں گھر جانے کی اجازت دے دی ہے۔

بیان کے مطابق مریض کو 10 دن تک علیحدہ وارڈ میں رکھ کر علاج کیا گیا۔ اس دوران اس کے دو ٹیسٹ پہلے ہوئے اور جمعہ کو تیسری مرتبہ ٹیسٹ کیا گیا تو نتیجہ منفی آگیا جس پر اسپتال اور محکمہ صحت کے حکام نے مریض کو کلیئر قرار دے دیا مگر وزیراعلیٰ سندھ کی ہدایت پر آج بھی اسپتال میں رکھ کر ہفتے کو گھر بھیج دیا جائے گا۔

قبل ازیں اجلاس میں سیکریٹری صحت نے بتایا کہ کل جمعرات کو جو چھٹا مثبت کیس سامنے آیا تھا وہ مریض 12 فروری کو ایران گیا اور 24 فروری کو واپس آیا۔ اس کے 15 قریبی لوگوں کو ٹریس کرکے ان کو گھر میں آئسولیشن میں رکھا گیا ہے جبکہ لوگ جو مریض کی بہت قریب تھے ان کے نمونے ٹیسٹ کیلیے بھیجے، ان میں 4 ٹیسٹ منفی آئے ہیں اور ایک نتیجہ ابھی آنا ہے۔

سیکریٹری صحت نے بتایا کہ 196 افراد نے مریضوں کے ساتھ سفر کیا ہے۔ ان سب کا ریکارڈ اضلاع کے ڈپٹی کمشنرز کے ساتھ شیئر کیا ہے۔ اس کے ساتھ قمبر شہدادکوٹ، نواب شاہ، جیکب آباد اور کراچی سے 13 نمونے ٹیسٹ کیلیے بھیجے تھے وہ سب منفی آئے ہیں۔

پاکستان میں کرونا کا سب سے پہلا مریض کراچی کا ایک 22 سالہ نوجوان ہے جو اپنے دودوستوں کے ساتھ 28 افراد کے گروپ میں ایران گیا تھا۔ گروپ 10 فروری کو تہران پہنچا، جہاں اسے فلو کی شکایت تھی۔ پھر 17 فروری کو اسے چکر آنا شروع ہوئے اور کمزوری محسوس ہوئی جبکہ کراچی واپس آنے تک اسے بخار، سر درد، ناک بہنا، جسم میں درد اور قے کی علامات ظاہر ہونا شروع ہوگئی تھیں جس پر اسے آغاخان اسپتال منتقل کیا گیا جہاں اس میں کرونا وائرس کی تصدیق ہوگئی۔

پاکستان میں اب تک کرونا وائرس کے محض 6 کیسز سامنے آئے ہیں اور تمام مریضوں کی حالت خطرے سے باہر ہے۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube