Wednesday, May 18, 2022  | 1443  شوّال  16

دنیا میں آلودگی سے ایک سال میں 90لاکھ افراد انتقال کرگئے

SAMAA | - Posted: Dec 15, 2018 | Last Updated: 3 years ago
SAMAA |
Posted: Dec 15, 2018 | Last Updated: 3 years ago

طبی جریدے کی رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ ایک سال کے دوران دنیا میں آلودگی کی وجہ سے 90 لاکھ انسان موت کے منہ میں چلے گئے،92 فیصد اموات غریب ممالک میں ہوئیں۔

معروف عالمی طبی جریدے دی لینسٹ کی جاری کردہ تازہ رپورٹ میں اس بات کا انکشاف کیا گیا ہے کہ صرف ایک سال کے دوران دنیا میں آلودگی کی وجہ سے 90 لاکھ انسان موت کے منہ میں چلے گئے جس میں سے 92 فیصد اموات غریب ممالک میں ہوئیں۔

 

طبّی جریدے دی لینسٹ کی رپورٹ کے مطابق 2015ء کے دوران دنیا بھر میں 90 لاکھ افراد کی ہلاکت کی وجہ آلودگی تھی جبکہ یہ اموات زیادہ تر کم متوسط اور کم آمدن والے ممالک میں ہوئیں۔ یہ وہ ممالک ہیں جہاں ایک چوتھائی اموات کی وجہ آلودگی ہی ہوتی ہے۔

بنگلہ دیش اور صومالیہ آلودگی کے حوالے سے سب سے زیادہ متاثرہ ممالک میں شامل ہیں، جب کہ برونائی اور سویڈین میں آلودگی سے متاثر ہو کر ہلاک ہونے والوں کی تعداد سب سے کم ہے۔ رپورٹ کے مطابق آلودگی سے زیادہ تر اموات غیر متعدی امراض کی وجہ سے ہوئیں جن میں ہارٹ اٹیک، سٹروک اور پھیپھڑوں کا سرطان وغیرہ شامل ہیں۔

رپورٹ کے مطابق کل 92 فیصد اموات غریب ممالک میں ہوئیں جو معاشی ترقی کے تیز عمل سے گزر رہے ہیں جیسا کے بھارت جو آلودگی سے متاثرہ ممالک کی فہرست میں پہلے نمبر پر ہے، جب کہ چین کا نمبر 16 واں ہے۔ 188 ممالک کی فہرست میں آلودگی سے متاثرہ ممالک میں برطانیہ کا نمبر 55 واں ہے تاہم امریکا، جرمنی، فرانس، سپین، اٹلی اور ڈنمارک سمیت بہت سے یورپی ممالک اس انڈیکس میں برطانیہ سے اوپر ہیں۔

محققین کا کہنا ہے کہ فضائی آلودگی غریب ممالک کے علاوہ امیر ممالک میں موجود غریبوں کو بھی متاثر کر رہی ہے۔ آلودگی سے بنیادی انسانی حقوق مثلاً جینے کے حق، صحت، محفوظ کام کے متاثر ہونے کے ساتھ ساتھ اس سے بچوں اور کمزور افراد کی حفاظت کو بھی خطرات لاحق ہوتے ہیں۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube